قومی اسمبلی کی  قائمہ کمیٹی   نےپی آئی اے کے اعلیٰ حکام کو طلب کرتے ہوئے ایسی تفصیلات مانگ لیں کہ اعلیٰ افسروں کے تو پسینے ہی چھوٹ جائیں گے

 قومی اسمبلی کی  قائمہ کمیٹی   نےپی آئی اے کے اعلیٰ حکام کو طلب کرتے ہوئے ...
 قومی اسمبلی کی  قائمہ کمیٹی   نےپی آئی اے کے اعلیٰ حکام کو طلب کرتے ہوئے ایسی تفصیلات مانگ لیں کہ اعلیٰ افسروں کے تو پسینے ہی چھوٹ جائیں گے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر مملکت برائے پارلیمانی امورعلی محمد خان نے کہا ہے کہ ملائیشیااور گلف ممالک کے لئے لیبر کی بڑی تعداد صوبہ خیبر پختون سے جاتی ہے مگر پی آئی اے ان مسافروں کو کراچی آنے پر مجبور کرتی ہے جہاں سے انہیں دوسرے ممالک لے جایا جاتا ہے، پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائن پشاوراورکوئٹہ سے فی الفورسروس شروع کرے،قائمہ کمیٹی نےاگلےاجلاس میں چیف ایگزیکٹو،چیف کمرشل آفیسر سمیت اعلی حکام کو طلب کر لیا کمیٹی نے تمام اعلی حکام کی تنخواہوں، مراعات نئی بھرتی سمیت دیگر تفصیلات بھی طلب کر لی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق  قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے قواعد وضوابط کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے  علی محمد خان نے کہا  کہ میڈیا میں آیا ہے کہ اراکین پارلیمنٹ کیلئے مزید مراعات دی جا رہی ہیں، ایسا کچھ نہیں ہے بلکہ اسی بجٹ میں ہی ان کے خاندان کو بھی ٹکٹ فراہم کیے جائیں گے، اراکین کمیٹی فنانس سے مزید کوئی مراعات نہیں مانگ رہی۔ اراکین کمیٹی کا کہناتھا کہ پی آئی اے نے پشاور اور ملتان کا روٹ ہی ختم کر دیا ہے، اس لیئے دوسری فضائی کمپنیوں کیلئے ہمیں ووچر فراہم کیے جائیں، اجلاس میں اراکین کمیٹی کی جانب سے ائیر ٹکٹ کا معاملہ اٹھایا گیا اراکین کمیٹی کا کہناتھا کہ وہ پارلیمنٹ کی کاروائی کی وجہ سے دور دراز علاقوں سے آتے ہیں،ان کو پی آئی اے کے ٹکٹ فراہم کیے جاتے ہیں جبکہ پی آئی اے نے بہت سے سٹاپ ختم کر دئیے ہیں، ان کی فیملی کو بھی اضائی ٹکٹ فراہم کیے جائیں وزیر مملکت پارلیمانی امورعلی محمد خان نے کہا   کہ پی آئی اے قومی کمپنی ہے اسے تر جیح دی جائے۔

اجلاس میں شریک فضائی کمپنی کے حکام کا کہنا تھا کہ کرونا کی وجہ سے روٹ بند کیے تھے اب ملتان کوئٹہ روٹ اوپن کر دیا گیا ہے جبکہ پشاور اگلے ہفتے کھول دیا جائے گا۔ قائمہ کمیٹی نے اگلے اجلاس میں چیف ایگزیکٹو، چیف کمرشل آفیسر سمیت اعلی حکام کو طلب کر لیا کمیٹی نے تمام اعلی حکام کی تنخواہوں، مراعات نئی بھرتی سمیت دیگر تفصیلات بھی طلب کر لی۔ اجلاس میں رکن اسمبلی اسامہ قادری، شاہدہ رحمانی نے جان سے مارنے کی دھمکیوں اور سیکورٹی سے متعلق خدشات کے متعلق کمیٹی کو  آئندہ جلاس میں وزارت داخلہ کے اعلی حکام آئی جی سندھ پو لیس کے علاوہ ہوم سیکرٹریز کو طلب کر لیا

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -