وزیر اعلیٰ کے آبائی ضلع ڈی جی خان میں پرایئویٹ اکیڈیموں کی من مانی جاری،ضلعی انتظامیہ نے بھی آنکھیں بند کر لیں

وزیر اعلیٰ کے آبائی ضلع ڈی جی خان میں پرایئویٹ اکیڈیموں کی من مانی جاری،ضلعی ...
وزیر اعلیٰ کے آبائی ضلع ڈی جی خان میں پرایئویٹ اکیڈیموں کی من مانی جاری،ضلعی انتظامیہ نے بھی آنکھیں بند کر لیں

  

ڈی جی خان(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے آبائی ضلع ڈیرہ غازی خان میں پرایئویٹ اکیڈیموں نے حکومتی احکامات ہوامیں اڑاتےہوئے کورونا ایس او پیز کے بغیر تعلیمی سرگرمیاں شروع کردیں،ضلعی انتظامیہ نےبھی پرایئویٹ اکیڈیموں کے من مانے رویے کے آگے ہتھیار ڈالتے ہوئے اپنی آنکھیں بند کرلیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب کے آبائی ضلع ڈیرہ غازی خان میں پرایئویٹ اکیڈیموں نے حکومتی ہدایات کو نظر انداز کرتے ہوئےلوٹ مار کا سلسلہ دھڑلے کے ساتھ شروع کردیا ہے اور صبح چھے بجے لیکر دس بجے تک حکومتی ایس او پیز اور احتیاطی تدابیر کے بغیر بچوں کی کلاسز کا آغاز کیا ہوا ہے۔والدین کی جانب سے بارہا مرتبہ ضلعی انتظامیہ کی توجہ اس سنگین مسئلے کی جانب مبذول کروائی گئی تاہم نادیدہ قوتوں کے اثر و رسوخ اور پیسے کی مبینہ چمک کی وجہ سے ضلعی انتظامیہ بھی پرایئویٹ اکیڈیموں کے مالکان کے سامنے بے بس دکھائی دے رہی ہے۔گلی محلوں میں بننے والی  پرایئویٹ اکیڈیموں میں جگہ کی قلت کے باوجود بیسئیوں طلبا و طالبات کو چھوٹے چھوٹے کمروں میں بھیڑ بکریوں کی مانند ٹھونسا جاتا ہے اور کورونا کی تمام تراحتیاطی تدابیر کویکسر فراموش کرنے کیوجہ سے موذی مرض کے پھیلنے کا بھی اندیشہ ہے۔والدین نے ضلعی انتظامیہ سے ایک بارپھر مطالبہ کیاہےکہ معصوم طلبا کی زندگیاں خطرے میں ڈالنے والی نجی اکیڈیموں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے یا پھر کم از کم حکومتی ایس او پیز اور کورونا سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر پر مکمل عملدآمد کروایا جائے۔

واضح رہے کہ چند روز قبل وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس میں 15 ستمبر کو ہی سکول کھولنے کا فیصلہ برقرار رکھا گیا ہے جبکہ دینی مدارس اور نجی اکیڈمیوں کو بھی پابند کیا گیا ہے کہ 15 ستمبر کے بعد ہی تعلیمی سرگرمیاں بحال کی جا سکیں گی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -ڈیرہ غازی خان -