شہبازگل کے ڈرائیور کے گھر پر بھی چھاپہ، اس کی اہلیہ اور برادرنسبتی کو تحویل میں لے لیا گیا

شہبازگل کے ڈرائیور کے گھر پر بھی چھاپہ، اس کی اہلیہ اور برادرنسبتی کو تحویل ...
شہبازگل کے ڈرائیور کے گھر پر بھی چھاپہ، اس کی اہلیہ اور برادرنسبتی کو تحویل میں لے لیا گیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) شہباز گل کا موبائل برآمد کرنے کیلئے گزشتہ رات پولیس نے شہباز گل کے ڈرائیور کے گھر پر چھاپہ مارا  جس دوران ڈرائیور اظہار فرار ہو گیا ، پولیس نے  اس کی اہلیہ اور برادر نسبتی کو حراست میں لے لیا۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق پولیس نے گزشتہ رات شہباز گل  کے موبائل کو برآمد کرنے کیلئے ان کے ڈرائیور کے گھر پر چھاپہ مارا ، پولیس کے مطابق ڈرائیور  اظہار فرا رہو گیا  جس پر پولیس نے اس کی اہلیہ اور برادر نسبتی کو اپنی تحویل میں لے لیا ۔ پولیس کی جانب سے ڈرائیور اظہار کی اہلیہ اور برادر نسبتی کے خلاف تھانہ آبپارہ میں مقدمہ درج کیا گیاہے ۔

نجی ٹی وی کے مطابق شہباز گل کا موبائل فون برآمد نہ کیا جا سکا ،  شہبازگل کےمطابق گرفتاری کےوقت موبائل فون ڈرائیورکودیاتھا، شہبازگل کےڈرائیورکےگھرپرموبائل فون ریکوری کیلئےچھاپہ ماراگیا تھا۔

ادھر اسلام آباد پولیس نے چھاپے کی تصدیق کر دی ، سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر  اسلام آباد پولیس کی جانب سے کہا گیا کہ   شہباز گل کے ڈرائیور کے گھر چھاپے اور گرفتاری کا عمل قانونی ہے، ڈرائیور کے اہلِ خانہ نے کارِ سرکار میں عملی مزاحمت کی۔ البتہ اسلام آباد کیپیٹل پولیس اس کیس سے جڑے تمام تر شواہد و ثبوت اکٹھے کررہی ہے۔ 

اسلام آباد پولیس کی جانب سے کہا گیا کہ جہاں کہیں بھی قانونی کارروائی کی ضرورت پڑی تو پولیس اپنا کام کریں گی ، کیس کا دائرہ کار اسلام آباد کے علاوہ دیگر صوبوں تک بھی پھیلایا جا سکت اہے ، ثبوت چھپانے یا مٹانے میں ملوث پائے گئے افاد کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی ۔

 اسلام آباد پولیس کی جانب سے مزید کہا گیا  کہ غلط خبریں  اور عوام میں اشتعال پھیلانے والوں کے خلاف بھی کارروائی کی جائےگی ، اسلام آباد پولیس قانون کی عملدآری کو یقینی بنائے گی ۔

خیال رہے کہ "بغاوت پر اکسانے" کے کیس میں شہباز گل کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا گیا تھا ۔ پولیس کی جانب سے عدالت میں  کہا گیا کہ ابھی تفتیش کی جانی ہے کہ شہباز گل نے یہ سب کس کے کہنے پر کہا ؟ اور جس مسودے سے ملزم سب کچھ بول رہے تھے وہ مسودہ بھی ان سے ریکور کرنا ہے ، جبکہ ان کا موبائل بھی فی الحال نہیں ملا جس کو ریکور کرنا ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -