پریذیڈنٹ ٹرافی میں سنچری بنانے کے بعد حوصلے بلند ہیں، عاصم کمال

پریذیڈنٹ ٹرافی میں سنچری بنانے کے بعد حوصلے بلند ہیں، عاصم کمال

  

دبئی ( آن لائن)پاکستانی بیٹنگ لائن کو ان دنوں شدید نوعیت کے مسائل کا سامنا ہے اور کسی ایسے بیٹسمین کی تلاش ہے جو مستقل مزاجی سے ٹیم کی مشکلات کو کم کرسکے۔ ایسے میں37 سالہ عاصم کمال نے پریذیڈنٹ ٹرافی میں پورٹ قاسم کی جانب سے زرعی ترقیاتی بینک کے خلاف سنچری بنانے کے بعد قومی ٹیم میں ایک اور کم بیک کے لئے پر امید ہیں۔ عاصم کمال نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ دسمبر2005 میں پاکستان کی جانب سے انگلینڈ کے خلاف لاہور ٹیسٹ کھیلا تھا۔2009میں سری لنکا کے خلاف سیریز میں واپسی ہوئی لیکن کوئی میچ نہ کھیل سکا۔ انہوں نے کہا کہ سیزن کے شروع میں سنچری داغ دی اور مزید دو تین سنچریاں بناکر سلیکٹرز کو متاثر کرنا چاہتا ہوں۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -