جیتنے کے باوجود میڈیا ہمیں غیر ضروری تنقید کا نشانہ بناتا ہے،مصباح الحق

جیتنے کے باوجود میڈیا ہمیں غیر ضروری تنقید کا نشانہ بناتا ہے،مصباح الحق

  

لاہور(آئی اےن پی) پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق نے کہا ہے کہ جیتنے کے باوجود میڈیا ہمیں غیر ضروری تنقید کا نشانہ بناتا ہے، میڈیا اور کھلاڑیوں کو ایک دوسرے کا احترام کرنا ہوگا، کھلاڑیوں کی ذات پر تنقید کرکے میڈیا ان کا امیج خراب کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ ایک نجی ٹی وی کو انٹر ویو میں مصباح الحق نے کہا کہ میڈیا کا کردار بہت اہم ہوتا ہے ،بعض لوگ میڈیا پر بیٹھ کر کبھی مجھ پر اور کبھی شاہد آفریدی ،کبھی کسی اور کھلاڑی پر بلاوجہ تنقید کرتے ہیں۔ اگر کوئی تعمیری تنقید کرے گا تو کسی کو اعتراض نہیں ہوگالیکن یہاں تنقید پرسنالٹی پر کی جاتی ہے۔ میڈیا اور کھلاڑیوں کو ایک دوسرے کا احترام کرنا ہوگا۔ اگر میں برا ہوں۔ شاہد آفریدی برا ہے تو پھر پاکستان کے لئے کرکٹ کون کھیلے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا کپتان ہونے کے باوجود مجھے مختلف القاب سے نواز گیا ہے ،اگر میں نے گیدڑ کہنے والوں کو جواب دیا تو ان میں اور مجھ میں کوئی فرق نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ میری فٹنس کا راز ان تھک محنت ہے۔ جب میں کپتان بنا تھا تو کسی نے مجھے اس کےلئے تیار نہیں کیا تھا تاہم ریجن اور ڈپارٹمنٹل ٹیموں کے مستقبل کو ذہن میں رکھتے ہوئے کپتان گروم کرنا ہوں گے تاکہ وقت آنے پر مسئلہ حل ہوسکے۔مصباح الحق نے کہا کہ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کا کپتان ہوں خدا نہیں، سارے فیصلے مشاورت سے کئے جاتے ہیں۔ مجھے کاہل ، سست اور مسٹر ٹک ٹک کہہ دیا گیا اگر میں سست ہوں تو میں نے اعلیٰ تعلیم کس طرح حاصل کی اور کرکٹ میں اعلیٰ مقام کس طرح حاصل کیا۔ مجھے کپتانی سے ہٹانے کی باتیں ہوتی رہیں لیکن میں راشد لطیف،باسط علی اور عامر سہیل کا شکر گذار ہوں جنہوں نے مجھے سپورٹ کیا۔ پی سی بی کے چیئرمین نجم سیٹھی کا بھی شکر گذار ہوں کہ انہوں نے مجھے ورلڈ کپ تک کپتان بنانے کا اعلان کیا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -