صہیونی جیل عملے نے اسیران کو یخ بستہ کوٹھڑیوں میں بند کر دیا

صہیونی جیل عملے نے اسیران کو یخ بستہ کوٹھڑیوں میں بند کر دیا

  

 غزہ (این این آئی)صہیونی جیل عملے نے بھوک ہڑتال کرنے والے اسیران کو فریج جیسی ٹھنڈی اور یخ بستہ کوٹھڑیوں میں بند کر دیا۔ فلسطین میں انسانی حقوق کی تنظیموں نے صہیونی عقوبت خانوں میں زیر حراست فلسطینی قیدیوں کے حوالے سے بتایا کہ صہیونی جیل عملہ بھوک ہڑتالی قیدیوں کے ساتھ انتقام پر اترآیا ہے۔ بھوک ہڑتال کرنے والے اسیران کو فریج جیسے ٹھنڈی اور یخ بستہ کوٹھڑیوں میں بند کیا گیا ہے حال ہی میں کلب برائے اسیران کے ایک وکیل جواد بولیس نے مغربی کنارے میں قائم عوفر جیل کا دورہ کیا جہاں انہوں نے جیل میں زیرحراست تین بھوک ہڑتالی اسیران سے بھی ملاقات کی۔ اس جیل میں بھوک ہڑتال کرنے والوں میں دو سگے بھائی اسلام اور محمد بدربھی شامل ہیں جنہوں نے 16اکتوبر سے اپنی بلا جواز اسیری کے خلاف بھوک ہڑتال کر رکھی ہے۔انسانی حقوق کے مندوب کا کہنا تھا کہ صہیونی جیلروں کے مظالم اور بلا جواز انتظامی حراست میں رکھے جانے کے خلاف فلسطینی قیدیوں نے بھوک ہڑتال جاری رکھی ہوئی۔ ان کی بھوک ہڑتال ختم کرانے کےلئے سخت سردی کے موسم میں انہیں تنگ، تاریک اور سرد ترین کوٹھڑیوں میں رکھا جا رہا ہے۔

 جس کے نتیجے میں اسیران کا وزن آدھے سے بھی کم ہوگیا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -