اسرائیلی پولیس کا مسجد اقصیٰ اور مقدس مقامات کی تعمیرو مرمت اور حفاظت کی ذمہ دار تنظیم کے دفاترکی تالہ بندی کا فیصلہ

اسرائیلی پولیس کا مسجد اقصیٰ اور مقدس مقامات کی تعمیرو مرمت اور حفاظت کی ذمہ ...

  

غزہ (این این آئی)اسرائیلی پولیس نے فلسطین میں مسجد اقصیٰ اور مقدس مقامات کی تعمیرو مرمت اور حفاظت کی ذمہ دار بڑی تنظیم کے دفاترکی ایک سال تک تالہ بندی کا فیصلہ کرتے ہوئے دفاتر بند کر دیئے۔ مقامی میڈیا کے مطابق متاثرہ ادارے تعمیراقصیٰ ومقدسات کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ قابض صہیونی پولیس نے تنظیم کے دفاتر کو ایک ماہ قبل مقبوضہ بیت المقدس میں بند کردیا تھا اور تنظیم کو شہرمیں ہرقسم کی سرگرمیوں سےایک ماہ تک روک دیا تھا۔ ابھی ایک مہینہ پورا ہونے میں کچھ دن باقی ہیں۔ قابض صہیونی فوج اور پولیس نے تنظیم کے متعلقہ حکام کو بتایا کہ انہیں اسرائیلی پولیس کو حکم ملا ہے کہ وہ تنظیم کے تمام دفاترکو ایک سال کیلئے بند کردیں۔بیان میں بتایا گیا کہ صہیونی ملٹری انٹیلی جنس کے ایک افسرنے انہیں بتایا کہ تعمیر اقصی و مقدسات فاﺅنڈیشن کی سرگرمیوں پر 2014 کے اختتام تک پابندی عائد کردی گئی ہے۔

 جس کا باضابطہ حکم نامہ مسکوبیہ پولیس سینٹر میں موجود ہے وہاں سے حاصل کیا جاسکتا ہے۔صہیونی پولیس کی جانب سے جاری کردہ اس حکم نامے میں بیت المقدس کے اسرائیلی پولیس چیف یوحنان ڈانینو کے دستخط ہیں جس میں یہ بھی لکھا گیا کہ مذکورہ تنظیم دہشت گردی کی کارروائیوں میں معاونت کرتی رہی ہے جس کے باعث اس کی سرگرمیوں پر پابندی عائد کی جا رہی ہے۔ ادھر تنظیم کے ڈائریکٹر حکمت نعامنہ نے اپنے ایک بیان میں مسجد اقصی کی تعمیرو مرمت کے ذمہ دار ادارے کے دفتر کی ایک سال کےلئے تالہ بندی کو دہشت گردانہ اور ظالمانہ قرار دے کرمسترد کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ دہشت گردی ہم نہیں بلکہ اسرائیل کر رہا ہے۔ عمار اقصی فاﺅنڈیشن صرف مقدس مقامات کی تعمیرو مرمت اور ان کی دیکھ بحال کا کام کرتی ہے جو اسرائیل کو کسی قیمت برداشت نہیں ہو رہا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -