نیلسن منڈیلا کو امن کی علامت کے طور پر دنیا ہمیشہ یاد رکھے گی، زرداری

نیلسن منڈیلا کو امن کی علامت کے طور پر دنیا ہمیشہ یاد رکھے گی، زرداری

  

اسلام آباد(خصو صی ر پورٹ)سابق صدر آصف علی زرداری نے جنوبی افریقہ کے عظیم لیڈر نیلسن منڈیلا کی وفات پر پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے جنوبی افریقہ کے صدر جیکب زوما کے نام ایک خط میں تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اپنے خط میں کہا ہے کہ عظیم لیڈر کی وفات کا سوگ صرف جنوبی افریقہ ہی میں نہیں بلکہ تمام دنیا میں منایا جائے گا اور نیلسن منڈیلا کو امن اور مفاہمت کی علامت کے طور پر دنیا ہمیشہ یاد رکھے گی۔ سابق صدر آصف علی زرداری کی جانب سے یہ خط پاکستان میں جنوبی افریقہ کے ہائی کمیشن کو ایک وفد نے پہنچایا ۔ اس وفد میں سینیٹر رضا ربانی، سابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی فیصل کریم کنڈی، سابق اراکین قومی اسمبلی فوزیہ حبیب ،پلوشہ خان اور سنٹرل سیکریٹریٹ اسلام آباد کے انچارج عامر فدا پراچہ شامل تھے۔ سابق صدر نے اپنے خط میں مزید لکھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے عظیم لیڈر نیلسن منڈیلا کی وفات پر تعزیت پیش کی جاتی ہے۔ نیلسن منڈیلا انسانی وقار اور مساوات کے عظیم فلسفے کے داعی تھے اور انہوں نے نسلی تفاوت کے خلاف عظیم جدوجہد کی اور اس میں کامیابی حاصل کی۔ انہوں نے تاریخ میں انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔ نیلسن منڈیلا کی آزادی کی جدوجہد کو خراجِ عقیدت پیش کرتے ہوئے سابق صدر پاکستان نے لکھا کہ نیلسن منڈیلا نے ذاتی طور پر شدید ترین مصائب کا سامنا کیا لیکن انہوں نے زیادتی کرنے والوں کو معاف کر دیا لیکن انہیں بھولے نہیں۔ انہوں نے اپنی قوم کو متحد کرنے کے لئے سچ اور مفاہمت کا کمیشن بنایا اور اس طرح تاریخ میںوہ کام کر دکھایا جو کہ ناممکن نظر آتا تھا۔ انہوں نے انسان دوست قوتوں کو مجتمع کیا اور نہ صرف جنوبی افریقہ بلکہ تمام انسانیت کے لئے کارہائے نمایاں سرانجام دئیے اسی لئے ساری انسانیت ان کی وفات پر غمگین ہے۔ سابق صدر نے جنوبی افریقی قوم کے لئے ہمت اور عظیم انسان کی روح کے ایصالِ ثواب کے لئے دعا بھی کی،علاوہ ازےںسابق صدر آصف علی زرداری نے پاکستان پیپلز پارٹی کے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ پارٹی انسانی حقوق کے تحفظ اور اس کے فروغ کے لئے بلا امتیاز مذہب اور صنف جدوجہد کرتی رہے گی۔ انہوں نے انسانی حقوق کے عالمی دن پر اپنے ایک پیغام میں کہا کہ انسانی حقوق اور جمہوریت کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ملک میں جمہوری ادارے مضبوط کئے جائیں تاکہ بنیادی انسانی حقوق کا تحفظ کیا جا سکے جن کی آئین اور اقوام متحدہ کے چارٹر میں ضمانت دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی جدوجہد ایک مسلسل جدوجہد ہے جس کے لئے ہمہ وقت ہمیں تیار رہنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اس موقع پر ہمیں ان چیلنجوں کی نشاندہی بھی کرنی ہے جو ہمیں انسانی حقوق کے لئے درپیش ہیں اور ہمیں ان چیلنجوں سے عہدہ برآ ہونے کے لئے کام کرنا چاہیے۔ ۔

زرداری

مزید :

صفحہ اول -