امریکی سویابین ایسوسی ایشن اور فیڈنگ پاکستان کے تحت فارمرز فیلڈ ڈے کا انعقاد

امریکی سویابین ایسوسی ایشن اور فیڈنگ پاکستان کے تحت فارمرز فیلڈ ڈے کا انعقاد

  

 لاہور(پ ر)امریکی سویا بین ایسوسی ایشن اور وِش(WISHH) کے پروگرام فیڈنگ پاکستان کے تحت ہمالیہ فش فارم پر فارمرز فیلڈ ڈے کا انعقاد کیا گیا۔ فیڈنگ پاکستان کے تحت سجائے گئے اس میلے میں ماہی گیروں اور

کسانوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی جہاں ماہی گیروں کو تلاپیا مچھلی اور فلوٹنگ فیڈ (تیرتی خوراک ) بارے آگاہی دینے کیلئےے تلاپیا مچھلیوں کے تالاب میں جال بھی لگایا گیا اور مچھلیوں کی نشوونما اور وزن کا مشاہدہ کیا گیا۔ اس موقع پر فیڈنگ پاکستان کے کنٹری مینیجر آر ایس این جنجوعہ نے میڈیا کے نمائیندوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایاکہ فیڈنگ پاکستان پروگرام کے تحت مچھلیوں کیلئے فلوٹنگ فیڈ کا پلانٹ بھی لگایا گیا ہے۔

 اور اب کسانوں کو پاکستان میں ہی سویابین سے تیار شدہ اعلی معیار کی فلوٹنگ فیڈ دستیاب ہو گی ۔انہوںنے بتایا کہ مچھلیوں کی فلوٹنگ فیڈ پانی کی سطح پر تیرتی رہتی ہے جس سے تمام خوراک بھرپور طریقے سے مچھلیوں کے استعمال میں آتی ہے اور خوراک ضائع نہیں ہوتی۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں غذائی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے تلاپیا مچھلی کی ہارویسٹنگ کی گئی جس کے نہایت حوصلہ افزاءنتائج برآمد ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ عام دیسی اقسام کی مچھلیاں عمومی طور پر 18ماہ میں تیار ہوتی ہیں جبکہ فلوٹنگ فیڈ کے استعمال سے تلاپیا مچھلی5 سے 6ماہ میں پوری طرح تیار ہو جاتی ہے۔ اس موقع پر بتایا گیا کہ تلاپیا مچھلی کی فی ایکڑ پیداوار بھی عام دیسی اقسام سے زیادہ ہے جو کہ 5000 مچھلی فی ایکڑ ہے۔ آر ایس این جنجوعہ نے بتایا کہ فلوٹنگ فیڈ سے مچھلیوں کی افزائش اوربڑھوتری میں تیزی آئی ہے اس طرح مچھلی بازار میں فروخت کیلئے جلدی تیار ہوجاتی ہے جو کاروباری حوالے سے نہایت سود مند ہے۔ فلو ٹنگ فیڈ کا تجربہ رکھنے والے کسانوں نے بتایا کہ فلوٹنگ فیڈ منافع کے اعتبارسے بے حد فائدہ مند ہے۔ کسانوں نے بتایا کہ تلاپیا مچھلی اور فلوٹنگ فیڈ کا استعمال نہایت حوصلہ افزاءرہا ہے جسے پیداوار میں اضافے کیلئے صنعتی پیمانے پر اپنانا چاہیے۔

مزید :

کامرس -