”میں نے یہ کام کالا جادو سیکھنے کیلئے کیا“

”میں نے یہ کام کالا جادو سیکھنے کیلئے کیا“
”میں نے یہ کام کالا جادو سیکھنے کیلئے کیا“

  

بدین (ڈیلی پاکستان آن لائن) بدین میں ایک شخص نے کالا جادو سیکھنے کے مکروہ مقصد کیلئے 2 معصوم بچوں کو قتل کرنے کا اعتراف کیا ہے تاہم اس کہنا ہے کہ یہ منصوبہ اس کا نہیں بلکہ اس کے ماموں کا تھا جس کے پاس وہ کالا جادو سیکھنے جاتا تھا۔

قبریں بیچنے کے کاروبار میں کے ایم سی ملازم کے ملوث ہونے کا انکشاف، ایک سال تک جس قبر کے لواحقین نہیں آتے تھے، اسے توڑ دیا جاتا تھا: گرفتار ملزم

تفصیلات کے مطابق ٹنڈو غلام علی پولیس کی جانب سے گرفتار کئے گئے ملزم سکندر باگرانی نے بتایا کہ اس نے 7 سالہ بچے سمیت 2 معصوم بچوں کو قتل کیا اور بعد ازاں انہیں نہر میں پھینک دیا۔ ملزم کا کہنا ہے کہ بچوں کو قتل کرنے کا منصوبہ اس کا نہیں بلکہ اس کے ماموں احسان باگرانی کا تھا اور اسی کے کہنے پر دونوں بچوں کو قتل کیا تاکہ اس سے کالے جادو کے مزید گر سیکھ سکوں۔ مقامی لوگوں نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ دونوں افراد کافی عرصے سے تعویز گنڈا اور جن و بھوت نکالنے کا کام کیا کرتے تھے۔

سکندر نے مزید اعتراف کیا کہ اس نے 6 سالہ بچے کو قتل کرنے کے بعد اس کی لاش گاﺅں کے قریب نصیر کینال میں پھینک دی تھی اور اس بچے کے والد نے ایف آئی آر بھی درج کرائی تھی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ اسے گوٹھ حاجی جمن کے قریب اپنے 7 سالہ بچے کی لاش ملی تھی جسے گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا۔

غیرت کے نام پر باپ نے اپنی نوجوان لڑکی کو قتل کرنے کی کوشش کی تو اس کی بھینس نے ایسا کام کر ڈالا کہ دیکھ کر آپ کی آنکھیں بھی کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

ایس ایچ او ٹنڈو غلام علی نے نجی خبر رساں ادارے ڈان کو بتایا کہ ایس ایس پی بدین عبدالقیوم پتافی کے حکم پر دھنی بخش مری پولیس تھانے میں دونوں ملزمان کے خلاف پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 302، 201 اور دفعہ 34 کے تحت مقدمہ درج کرلیا لیا گیا ہے اور احسان باگرانی کو بھی گرفتار کرلیا گیا ہے۔

مزید : بدین