”اس میں کچھ وکلاءاپوزیشن کے بھی تھے جنہوں نے ۔۔“ فیاض الحسن چوہان نے پی آئی سی کے معاملے پر رد عمل جاری کر دیا ، چیف جسٹس سپریم کورٹ سے درخواست بھی کر دی

”اس میں کچھ وکلاءاپوزیشن کے بھی تھے جنہوں نے ۔۔“ فیاض الحسن چوہان نے پی آئی ...
”اس میں کچھ وکلاءاپوزیشن کے بھی تھے جنہوں نے ۔۔“ فیاض الحسن چوہان نے پی آئی سی کے معاملے پر رد عمل جاری کر دیا ، چیف جسٹس سپریم کورٹ سے درخواست بھی کر دی

  



لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن )صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے وکلاءکے پی آئی سی پر حملے پر رد عمل دیتے ہوئے کہاہے کہ اس میں کچھ وکلا اپوزیشن کے بھی شامل تھے ، یہ سوچی سمجھی سازش تھی اور انہیں لوگوں نے مجھ پر بھی تشدد کیا ، یہ چاہتے تھے کہ کوئی لاش گرے جیسے ماڈل ٹاﺅن کا واقعہ ہوا تھا ۔

نجی ٹی وی جی این این نیوز کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے فیاض الحسن چوہان کا کہناتھا کہ ہماری سٹریٹیجی یہ تھی کہ بغیر کسی جانی نقصان کے وکلاءکو وہاں سے منتشر کیا جائے ، دس کیلوں کو میں نے خود جا کر عوام اور پولیس کے ہاتھوں میں سے بچایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان لوگوں کے خلاف ایف آر کٹے گی اور انہیں نشان عبرت بنائیں گے ۔

فیاض الحسن چوہان کا کہناتھا کہ 15 وکیلوں کو گرفتار کر لیا گیاہے ، باقیوں کو بھی سی سی ٹی وی کی مدد سے گرفتار کیا جائے گا ، میں چیف جسٹس آف پاکستان سے درخواست کرتاہوں کہ وہ اس معاملے پر سوموٹو لیں ، سینئر وکلاءسے بھی کہتاہوں کہ وہ ان کے لائسنس کینسل کریں اور انہیں اپنی صفوں سے نکال باہر پھینکیں ۔

مزید : قومی