پی آئی سی پر حملہ کرنے والے وکلاء کےخلاف کریک ڈاؤن شروع،لاہور بار کے صدر گرفتار

پی آئی سی پر حملہ کرنے والے وکلاء کےخلاف کریک ڈاؤن شروع،لاہور بار کے صدر ...
پی آئی سی پر حملہ کرنے والے وکلاء کےخلاف کریک ڈاؤن شروع،لاہور بار کے صدر گرفتار

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پنجاب پولیس نے انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی پر دھاوا بولنے والے وکلا کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کردیا ہے اور اطلاعات کے مطابق پولیس نے لاہور بار ایسوسی ایشن کے صدر عاصم چیمہ سمیت 15وکلاء کو گرفتار کرلیا ہے،دوسری جانب پنجاب بارکونسل نے وکلا کی گرفتاریوں کے کل صوبے بھرمیں ہڑتال کااعلان کردیا۔

پنجاب بار کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ صوبے بھر میں وکلا عدالتوں کا بائیکاٹ کریں گے اور احتجاجی ریلیاں نکالی جائیں گی.واضح رہے کہ آج پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلا نے ہنگامہ آرائی کر کے ہسپتال کے اندر اور باہر توڑ پھوڑ کی جس کے باعث طبی امداد نہ ملنے سے 4 مریض جاں بحق اور متعدد افراد زخمی ہوگئے،گرینڈ ہیلتھ الائنس کے چیئرمین ڈاکٹر سلمان حسیب کے مطابق اس پرتشدد مظاہرے کے دوران4 مریض اپنی زندگی کی بازی ہار گئے، رپورٹس کے مطابق کئی مریض تشویش ناک حالت میں تھے اور وکلا کی جانب سے ایمرجنسی وارڈز میں گھسنے کے بعد انہیں طبی امداد نہ مل سکی کئی مریضوں کے لواحقین نے الزام عائد کیا کہ حملہ آور وکلاء نے مریضوں کو لگے آکسیجن ماسک بھی اتارپھینکے جبکہ آپریشن تھیڑاور آئی سی یو کو بھی نشانہ بنایا گیا.واضح رہے کہ مذکورہ معاملہ اس وقت شروع ہوا جب وکلا نے الزام عائد کیا کہ وائرل ہونے والی ایک ویڈیو میں ینگ ڈاکٹرز وکلا کا مذاق اڑا رہے تھے جس پر انہوں نے سوشل میڈیا پر مہم چلائی.

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور