اپوزیشن کسی ادارے کی بجائے عوامی قوت پر انحصار کرے‘ مشتاق احمد 

  اپوزیشن کسی ادارے کی بجائے عوامی قوت پر انحصار کرے‘ مشتاق احمد 

  

پشاور(سٹی رپورٹر) جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کے امیر سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ اختیار اسٹیبلشمنٹ کا نہیں عوام کا ہے۔ وہ جلد بیدار ہوں گے اور ان کے فیصلے کا احترام ضرور کیا جائے گا۔ اپوزیشن کسی ادارے کے بجائے عوامی قوت پر انحصار کرے۔اسٹیٹ بنک آئی ایم ایف کے پاس گروی رکھ دیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ معاہدہ غلامی کی دستاویز اور شرم ناک ہے جس کے مطابق پٹرولیم لیوی میں ماہوار پانچ روپے اضافہ، بجلی پر دی گئی رعایات ختم اور دو سو ارب روپے ترقیاتی فنڈز میں کٹوتی کر لی جائے گی جبکہ چار سو ارب روپے کے ٹیکس عائد کیے جائیں گے۔قومی معیشت خطرناک موڑ پر پہنچی ہوئی ہے۔ اشیا خورد و نوش کے نرخ بے تحاشا بڑھ چکے ہیں جو عوام کے ساتھ زیادتی ہے۔ حکمران اور انکی پالیسیاں بے نقاب ہو چکی ہیں۔ وہ دورہ صوابی کے دوران شیوہ اڈہ کے علاقے آسوٹہ شریف میں ورکرز کنونشن سے خطاب کررہے تھے۔ ورکرز کنونشن سے جماعت اسلامی صوابی کے امیر میاں افتخار الدین، امیدوار برائے چیئرمین تحصیل کونسل رزڑ اختر حامد، امیدوار برائے جنرل کونسلر ویلج کونسل آسوٹہ شریف حامد علی اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا کہ لوٹ مار، پسماندگی، بدامنی، بدعنوانی اور ادویات کی قیمتیں بڑھ چکی ہیں۔ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر گر چکی ہے۔کورونا کے فنڈز میں چالیس ارب روپے کا گھپلے کیا گیا ہے۔ معاشی اشاریے حکومتی ناکامی، جھوٹ، فریب، عہد شکنی اور یوٹرن پالیسی ناکامی کا ثبوت ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ریاست مدینہ کا دعویٰ کر کے غیر اسلامی و غیر شرعی قانون سازی کی گئی ہے۔ مساجد پر قبضہ کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔انھوں نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن سے حکومت دو برس تک راہ فرار اختیار کر کے آئین کی خلاف ورزی کرتی رہی۔ جماعت اسلامی نے عدالت عالیہ سے رجوع کیا اور الیکشن کمیشن نے بھی آئینی تقاضے پورے کرنے پر زور دیا۔ ہم عدلیہ کے فیصلے اور الیکشن کمیں شن کی جدوجہد پر ان کے شکر گزار ہیں۔ انھوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کسی انتخابی اتحاد کا حصہ نہیں بنے گی۔ بلدیاتی الیکشن میں سرکاری مشینری کے استعمال اور قانون شکنی پر وزیر اعظم سمیت دیگر مقتدر شخصیات کے خلاف الیکشن کمیشن کارروائی کرے۔ ای وی ایم مشین قبل از پولنگ ڈیجیٹل دھاندلی کا آلہ اور بھاگنے کی کوشش ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکمرانوں نی مودی کو ریلیف دیا اور کشمیر کا مسئلہ پس پشت ڈال دیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم بلدیاتی الیکشن میں با کردار و دیانت دار، تعلیم یافتہ اور خدمتگار قیادت سامنے لائے ہیں۔عوام بیدار ہوں گے تو انقلاب جلد آئے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -