ایڈز کنٹرول پروگرام کا“ احتیاط علاج سے بہتر“کے موضوع پر سیمینار

 ایڈز کنٹرول پروگرام کا“ احتیاط علاج سے بہتر“کے موضوع پر سیمینار

  

لاہور(پ ر)منسٹر ہیلتھ پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کے ہیلتھ ویژن اور سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر عمران سکندر بلوچ  کی ہدایات پر پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام نے سروسز انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے تعاون سے ''احتیاط علاج سے بہتر'' کے موضوع پر سیمینار کا انعقاد کیاجس میں سیکٹری پنجاب بلڈ ٹرانسفیوژن اتھارٹی ڈاکٹر محمد اطہر، پنجاب ہیلتھ کئیر کمیشن سے ڈاکٹر قمر سلمان، کنسلٹنٹ انفیکشنز واپڈا ہسپتال ڈاکٹر میمونہ ارشاد، یونیسف پاکستان سے ڈاکٹر نائلہ شاہد، پرنسپل سمز ڈاکٹر طیبہ وسیم، چیئرمین ڈپارٹمنٹ آف میڈیسن ڈاکٹر محمد عمران اور ایسوسی ائیٹ پروفیسر میڈکل یونٹ 4 ڈاکٹر صوبئیہ قازی نے شرکت کی۔سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے پراجیکٹ ڈائریکٹر پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام ڈاکٹر فیصل مسعود نے ایڈز کے مریضوں کے لیے کئے گئے اقدامات پر روشنی ڈالی۔

 اور بتایا کہ ادارہ جلد اپنی سروسز کا دائرہ کار پنجاب کے 16 سے 36 اضلاع تک پھیلا دے گا۔ انہوں نے بتایا کے ایچ آء وی ایڈز کے مریضوں کو ایک ہی چھت تلے تمام سہولیات بالکل مفت فراہم کی جا رہی ہیں۔ علوہ ازیں مختلف کمیونیٹیز کو ملا کر آگاہی اور شعور پھیلایا جارہا تاکہ زیادہ سے زیادہ افراد ایچ آء وی ایڈز سے محفوظ رہیں اور اگر خدا نہ خواستہ کسی کو ایڈز ہو بھی جائے تو بروقت علاج سے کافی حد تک اسکے پھیلاؤ کو روکا جاسکتا ہے۔سیمینار کے شرکاء نے ایڈز کے بارے میں آگاہی رکھنے پر بھرپور زور دیا اور اس سلسلے میں پنجاب ایڈز کنٹرول پروگرام کی کاوشوں کو سراہا۔ پرنسپل سمز میڈیکل کالج پروفیسر طیبہ وسیم نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارہ معاشرہ جسے ایڈز ہوجائے اسکو بڑی حقارت والی نظر سے دیکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتقال خون میں بے احتیاطی کی وجہ سے بہت سے ایچ آئی وی کے کیس سامنے آئے ہیں اور ہسپتالوں اور بلڈ بنکس میں بیماریوں سے پاک خون کی منتقلی کو یقینی بنانا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -