پلاٹ کیس ُرپورٹ داخل نہ کرنے  کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی ایل  ڈی اے سے جواب طلب 

پلاٹ کیس ُرپورٹ داخل نہ کرنے  کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی ایل  ڈی اے سے جواب طلب 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس علی باقر نجفی نے سپریم کورٹ کے سابق مرحوم جج سید جمشید علی شاہ کے پلاٹ کیس میں 4سال گزرنے کے باجود رپورٹ داخل نہ کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی ایل ڈی اے سے جواب طلب کرلیا،جسٹس (ر)سید جمشید علی شاہ کا دوسال قبل انتقال ہواتھا،یہ درخواست جسٹس ریٹائرڈ سید جمشید علی شاہ نے ذاتی حیثیت میں 2017 میں دائر کی تھی جبکہ وہ 2019 میں وفات پا گئے،ان کا موقف تھا کہ  ایل ڈی اے ایونیو ون میں پلاٹ نمبر 912 بلاک ایل میں الاٹ ہوا، پلاٹ کی رقم پانچ لاکھ 70 ہزار روپے قسطوں میں ڈیویلپمنٹ چارجز سمیت ادا کردئیے گئے،  ایل ڈی اے حکام کے مطالبے پر تین لاکھ 40 ہزار روپے کی مزید ادائیگی کی، پلاٹ کی 60 مربع فٹ مزید اراضی کیلئے 61 ہزار 620 بیس روپے مزید ادا کئے،  13 سال گزرنے کے باوجود پلاٹ نہ دیا گیا جبکہ دیگر 321 الاٹیز کو متبادل پلاٹ بھی دے دیئے گئے، درخواست گزار کیخلاف امتیازی سلوک کیا جارہا ہے جس کی ائین اور قانون اجازت نہیں دیتا، سابق ڈی جی احد چیمہ کو ایل ڈی اے ملازمین کی جانب سے ڈھکے چھپے انداز میں رشوت طلب کرنے پر کارروائی کیلئے خط بھی لکھا، یادرہے کہ جسٹس ریٹائرڈ سید جمشید علی شاہ نے یہ خط اس وقت لکھا جب وہ ممبر لاء اینڈ جسٹس کمیشن تھے۔

جواب طلب 

مزید :

صفحہ آخر -