حماس نے 17ہزار نئے جنگجوؤں کی تربیت مکمل کر لی

حماس نے 17ہزار نئے جنگجوؤں کی تربیت مکمل کر لی

غزہ (آن لائن)فلسطین کی مزا حمتی تنظیم حماس نے 17 ہزار نئے نوعمر جنگجوؤں کی تربیت مکمل کر لی۔ غیر ملکی خبر رسا ں ادارے کے مطا بق عسکری تنظیم حماس نے گزشتہ ماہ عسکری تربیت کے دو پروگرام مکمل کیے ہیں۔ اِن تربیتی کیمپوں میں کم از کم 17 ہزار ٹین ایجرز کو جنگی ساز و سامان کی تربیت دی گئی ہے۔ تربیت حاصل کرنے والوں میں سے ایک چودہ برس کا حاتم ہے اور اْس نے فرا نسیسی نیوز ایجنسی کو بتایا کہ گزشتہ برس اسرائیلیوں نے اْس کی بھتیجی کو ہلاک کیا تھا اور اب وہ انہیں مارے گا۔ حاتم نے ایک ایک ہفتے پر مشتمل دو تربیتی پروگراموں میں شمولیت کی تھی۔ فلسطینی نو عمروں کی جنگی تربیت کا اہتمام حماس کے فوجی شعبے عزالدین القسام بریگیڈز نے کیا تھا۔غزہ میں منعقدہ پاسنگ آؤٹ تقریب کے بعد حاتم نے کہا کہ وہ اب ایک مزاحمتی فائٹر بنے گا۔ حماس نے اِس تربیتی پروگرام کے حوالے سے واضح کیا ہے کہ وہ اسرائیل کے خلاف اگلی جنگ کی تیاریوں میں مصروف ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ گزشتہ برس اسرائیل اور حماس کے درمیان 50 روزہ جنگ لڑی گئی تھی۔ اس جنگ میں تقریباً 22 سو فلسطینیوں کی ہلاکت ہوئی تھی جبکہ 73 اسرائیلی مارے گئے تھے۔ اِس کے علاوہ اسرائیلی جنگی طیاروں کی بمباری سے غزہ کے کئی رہائشی علاقے تباہ و برباد ہو کر رہ گئے تھے۔اقوامِ متحدہ کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ برس کی اسرائیل اور حماس کی جنگ میں پانچ سو بچوں کی ہلاکت ہوئی تھی۔ اِس جنگ کے خاتمے کے صرف پانچ ماہ بعد حماس کے فوجی شعبے عزالدین القسام بریگیڈز کی نگرانی میں شروع کیے جانے والے عسکری تربیتی کیمپوں میں ہزاروں نوعمر فلسطینیوں نے نام رجسٹر کروائے ہیں۔ حاتم کی طرح ایک اور پندرہ سالہ بچے ابْو ہاربِد کا کہنا ہے کہ وہ عزالدین القسام میں اِس لیے شامل ہوا ہے کہ یہ ایک مضبوط عسکری گروپ ہے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق غزہ میں انسانی زندگی کو کئی مشکلات کا سامنا ہے اور ایک نئی جنگ کا امکان بھی ہے۔غزہ میں حماس کے تربیتی کیمپوں کے حوالے سے انسانی حقوق کے اداروں نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ان اداروں کا کہنا ہے کہ جنگ سے ڈرے سہمے بچوں کے جذبات و احساسات کا یہ غلط استعمال ہے اور اْن کے خوف کو ڈھال بنا کر اسلحے کے استعمال کی تربیت دی جا رہی ہے۔ اِس سے قبل حماس کی نگرانی میں نوعمر بچوں اور دوسرے رضاکاروں کے لیے جنگی کیمپوں کا انتظام کیا جاتا تھا۔ اِس مرتبہ تمام عسکری تربیت کی نگرانی عزالدین القسام بریگیڈز کی نگرانی میں مکمل کی گئی ہے۔ حماس کے کیمپوں میں نوعمر بچوں کے لیے دورانِ تربیت ہلکے پھلکے تفریح کے پروگرام بھی شامل ہوا کرتے تھے۔ اب عزالدین القسام بریگیڈز کے کیمپوں میں تفریحی حصے کو ختم کرتے ہوئے تربیت کے پروگرام کو انتہائی سنجیدگی سے مرتب کیا گیا تھا۔

مزید : عالمی منظر