لاہور ہائیکورٹ کا جوڈیشل الاؤنس اضافہ اوردیگر بقایا جات کی ادائیگی کا حکم

لاہور ہائیکورٹ کا جوڈیشل الاؤنس اضافہ اوردیگر بقایا جات کی ادائیگی کا حکم

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے عدالت عالیہ کے ہزاروں ملازمین کو جوڈیشل الاؤنس میں 50فیصد اضافے اور ایڈہاک ریلیف الاؤنس کے بقایا جات کی ادائیگی کا حکم دے دیا۔مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے درخواست پر سماعت کی۔میاں بلال بشیر ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ وزیر اعظم نے دو ہزار دس میں ملک بھر کے عدالتی ملازمین کو جوڈیشل الاؤنس میں پچاس فیصد اضافے اور بنیادی تنخواہ کا پچاس فیصد ایڈہاک ریلیف الاؤنس دینے کا حکم دیا تھامگر لاہور ہائیکورٹ کے ملازمین کو یہ الاؤنسز نہیں دیئے جا رہے، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب محمد حنیف کھٹانہ نے بتایا کہ صوبائی حکومت وزیر اعظم یا کسی دوسرے ادارے کے فیصلے کی پابندنہیں ہے، حکومت پنجاب ہائیکورٹ ملازمین کو یکم جولائی 2014سے جوڈیشل الاؤنس ادا کر رہی ہے تاہم 4 برسوں کے بقایا جات ادا نہیں کر سکتے، عدالت نے پنجاب حکومت کو حکم دیا کہ عدالت عالیہ کے ملازمین کو جوڈیشل الاؤنس میں 50فیصد اضافہ، اس کے بقایا جات اور ایڈہاک ریلیف الاؤنس دیا جائے۔

مزید : صفحہ آخر