پیرامیڈیکل سٹاف، ڈاکٹرز اور کلرکوں کا مطالبات کے حق میں مظاہرہ دھرنا

پیرامیڈیکل سٹاف، ڈاکٹرز اور کلرکوں کا مطالبات کے حق میں مظاہرہ دھرنا

 لاہور(جنرل رپورٹر 228 خبر نگار) صوبائی دارالحکومت میں گزشتہ روز پیرا میڈیکل سٹاف، ڈاکٹرز اور کلرک سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں نے مال روڈ ، فیروز پور روڈ سمیت دیگر اہم شاہراہوں پر احتجاجی مظاہرے اور دھرنے دیئے جس سے مال روڈ اور اسی سے ملحقہ سڑکیں، فیروز پور روڈ،میوہسپتال روڈ ، نیلا گنبد، ایجرٹن روڈ ، سول سیکرٹریٹ روڈ میں ٹریفک کی لمبی لائنیں لگ گئی جو گھنٹوں بند رہے اور لوگ گاڑیوں میں پھنسے رہے حالات بے قابو ہونے میں ڈی سی او لاہور کیپٹن عثمان ڈی جی ہیلتھ سمیت دیگر حکام مظاہرین سے مذاکرات کے لئے پہنچ گئے تاہم مظاہرین نے اپنے مظاہرے دوپہرے کے بعد دھرنوں میں تبدیل کر دیئے پنجاب پیرا میڈیکل سٹاف ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کی قیادت میں سینکڑوں ملازمین نے مال روڈ بند کر دیا ، ینگ ڈاکٹرز نے فیروز پور روڈ اور کلرکوں نے سول سیکرٹریٹ روڈ پر دھرنا دے کر روڈ بند کر دیا، گزشتہ روز اپنے مطالبات کے حق میں پنجاب پیرا میڈیکل سٹاف ایسوسی ایشن کی اپیل پر صوبائی دارالحکومت کے سرکاری ہسپتالوں میں درجہ چہارم سمیت دیگر ملازمین نے مکمل ہڑتال کی ہڑتال کے باعث ہسپتالوں کا نظام دھرم برہم ہو گیا بعدازاں اپنے قائدین کی قیادت میں سینکڑوں ملازمین نے میوہسپتال سے پنجاب اسمبلی کی طرف مارچ کیا اور پنجاب اسمبلی میں داخل ہونے کی کوشش کی پولیس نے ناکام بنا دیا۔ جس کے بعد مظاہرین نے پنجاب کے باہر دھرنا دے دیا اور مال روڈ ہر قسم کی ٹریفک کی روانگی کے لئے بند کر دیا ملازمین نے پنجاب اسمبلی کے احاطہ میں داخل ہونے کی کوشش کی جو پولیس نے ناکام بنا دی محکمہ صحت کے ملازمین نے ہسپتالوں میں ہڑتال کی جس سے ہسپتالوں میں صفائی نہ ہوئی آپریشن ملتوی کر دیئے گئے آؤٹ ڈورز میں حاضری کم رہی پنجاب اسمبلی چوک میں دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے ایسوسی ایشن کے راہنماؤں، جاوید چوہان، یوسف ملا ارو ارشد بٹ نے کہا کہ پنجاب پیرا میڈیکل سٹاف کے مطالبات 4سالوں سے پورے نہیں کئے جا رہے مطالبات پورے نہ ہوئے تو کسی افسر اور وزیر اعلیٰ کو دفاتر میں نہیں داخل ہونے دیں گے اطلاع پا کر وزیر اعلیٰ نے اس کا سخت نوٹس یا اور محکمہ صحت کے حکام کو مذاکرات کر کے مطالبات حل کرنے کا حکم دیا جس پر ڈی جی ہیلتھ ڈاکٹر زاہد پرویز اور ڈی سی او مذاکرات کے لئے مال روڈ پہنچ گئے ۔ایسوسی ایشن کے نمائندوں کو اپنی گاڑیوں میں سیکرٹری صحت کے دفتر لے گئے جہاں مذاکرات جاری تھے تاہم دھرنا بھی جاری رہا دوسری طرف ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی اپیل پر جنرل ہسپتال کے سامنے دھرنا دے دیا اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی تاہم مشیر صحت کی مداخلت پر ڈاکٹروں نے وقتی طور پر احتجاج ختم کر دیا تیسرا مظاہرہ ایپکا نے سول سیکرٹریٹ کے باہر کیا جہاں انہوں نے دھرنا دے کر ٹریفک بند کر دی دو پہر تک جاری رہا اسی وجہ سے لاہور کی اہم شاہراہوں پر ٹریفک بند ہو گی اور لوگ گاڑیوں میں بیٹھے رہے۔

مزید : علاقائی