ایف آئی اے نے وفاقی وزیر داخلہ کو ایگزیکٹ کمپنی سکینڈل سے متعلق ٹھوس ثبوت فراہم کردیے

ایف آئی اے نے وفاقی وزیر داخلہ کو ایگزیکٹ کمپنی سکینڈل سے متعلق ٹھوس ثبوت ...
ایف آئی اے نے وفاقی وزیر داخلہ کو ایگزیکٹ کمپنی سکینڈل سے متعلق ٹھوس ثبوت فراہم کردیے

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی ”ایف آئی اے “نے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کوایگزیکٹ کمپنی سکینڈل کے ٹھوس ثبوت فراہم کردیے ۔اسلام آباد میںوفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں ایف آئی اے حکام نے چوہدری نثار کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ایگزیکٹ سکینڈل میں ٹھوس ثبوت سامنے آئے ہیں جس سے ہزاروں افراد متاثر ہوئے ۔

ان کا کہنا تھا کہ 300سے زائد یونیورسٹیز کی ملکی اور غیرملکی اداروں نے تصدیق نہیں کی جبکہ امریکی حکام نے 15یونیورسٹیز کے جعلی ہونے کی باضابطہ اطلاع دی ۔انہوں نے بتا یا کہ ایگزیکٹ کمپیوٹرز سے ایک سو ٹیرا بائٹ ڈیٹا حاصل کر لیا گیا جبکہ کلاوڈ پرموجود ریکارڈ سے اب تک 75فیصد ڈیٹا حاصل کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ ایگزیکٹ سکینڈل سے ہزاروں کی تعداد میں ملکی و غیر ملکی افراد متاثر ہوئے ۔

گر فتار اشتہاریوں سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے ایف آئی اے حکام نے بتا یا کہ گزشتہ سال 1245اشتہاریوں کو گرفتار کیا گیا جبکہ2014میں 911اشتہاریوں کو گرفتار کیا گیا تھا،تمام اشتہاریوں کے نام ای سی ایل میں ڈال دئیے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال 14.6چھ ارب روپے کی ریکوری کی گئی ۔اس موقع پر چوہدری نثار نے ایف آئی اے حکام کو ہدایت کی کہ تمام اشتہاریوں کا سنٹرل ڈیٹا بنک بنا یا جائے اور ان سے متعلق معلومات پولیس اور حساس اداروں کے ساتھ شیئر کی جائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ مفرور اشتہاریوں کے پاسپورٹ اور شناختی کارڈ منسوخ کیے جائیں ۔

مزید : قومی