اگر دنوں میں کروڑ پتی بننا چاہتے ہیں تو سعودی عرب میں یہ کام شروع کرلیں

اگر دنوں میں کروڑ پتی بننا چاہتے ہیں تو سعودی عرب میں یہ کام شروع کرلیں
اگر دنوں میں کروڑ پتی بننا چاہتے ہیں تو سعودی عرب میں یہ کام شروع کرلیں

  

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر آپ دنوں میں کروڑ پتی بننا چاہتے ہیں تو سعودی عرب میں جا کر کاسمیٹکس کا کاروبار شروع کر لیں کیونکہ ایک رپورٹ کے مطابق مغربی ممالک ودیگر تمام عرب دنیا کی نسبت سعودی عرب میں خواتین میک اپ کے سامان کی خریداری پر کہیں زیادہ رقوم خرچ کرتی ہیں، اور یہ رجحان آنے والے سالوں میں بھی جاری رہے گا۔

حال ہی میں سعودی محکمہ کسٹمز کی طرف سے جاری کیے گئے اعدادوشمار میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ سال 2ارب30کروڑ ریال (تقریباً 64ارب 19کروڑ روپے) کی کاسمیٹکس اشیاءدرآمد کی گئی ہیں۔ عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق محکمہ کسٹمز کے ترجمان عیسیٰ العیسیٰ کا کہنا تھا کہ ”گزشتہ سال جو میک اپ کا سامان درآمد کیا گیا اس کا وزن تقریباً 4کروڑ46لاکھ کلوگرام تھا۔ “ایک میگزین کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی کاسمیٹکس کی مارکیٹ کی مالیت 60ارب ریال (تقریباًساڑھے 16کھرب روپے) ہے اور اس میں سالانہ 11فیصد کے تناسب سے اضافے کی پیش گوئی بھی کی جا رہی ہے۔ میگزین نے اپنی رپورٹ میں یہ بھی پیش گوئی کی ہے کہ سعودی عرب میں اگلے 5سالوں میں کاسمیٹک سرجری کلینکس کی تعداد میں 10گنا اضافہ ہو جائے گا۔

مزید جانئے: ہر سیکنڈ ایپل، گوگل اور فیس بک کتنی رقم کماتے ہیں؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ”کاسمیٹکس کی عالمی مارکیٹ میں مشرق وسطیٰ کے ممالک کا حصہ 20فیصد ہے جبکہ اس حصے داری میں سعودی عرب مشرق وسطیٰ کے دیگر تمام ممالک میں سرفہرست ہے۔ سعودی عرب اور دیگر گلف ممالک میں پرفیومز اور بالوں کی نگہداشت کی مصنوعات کی مانگ میں خاصا اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ یونیورسٹی آف طائف کے شعبہ ایڈمنسٹریٹو اینڈ فنانشل سائنسنزکے ڈائریکٹر ڈاکٹر سلیم بجاجہ کا کہنا تھا کہ ”کاسمیٹکس کے حوالے سے سعودی عرب کی مارکیٹ مشرق وسطیٰ کے دیگر ممالک کی نسبت سب سے بڑی ہے اور یہاں لوگ لگژری مصنوعات کی خریداری کو ترجیح دیتے ہیں۔“ انہوں نے کہا کہ ”سعودی عرب میں خواتین اوسطاً 15ہزار ریال (تقریباً4لاکھ 18ہزار وپے) سالانہ کاسمیٹکس پر خرچ کرتی ہیں۔ کسی بھی سعودی فیملی کے بجٹ میں زیادہ حصہ خواتین کے میک اپ کا ہوتا ہے۔ “ ڈاکٹر سلیم نے مزید بتایا کہ ”مالی طور پر خودمختار خواتین اپنی آمدنی کا 70سے 80فیصد تک کاسمیٹکس پر خرچ کرتی ہیں۔ “

مزید : بزنس