ملائیشیا کا جہاز روہنگیا مسلمانوں کیلئے امدادی سامان لے کر میانمار پہنچا تو مقامی لوگوں نے کیا کام کردیا؟ جان کر ہر مسلمان دکھی ہوجائے

ملائیشیا کا جہاز روہنگیا مسلمانوں کیلئے امدادی سامان لے کر میانمار پہنچا تو ...
ملائیشیا کا جہاز روہنگیا مسلمانوں کیلئے امدادی سامان لے کر میانمار پہنچا تو مقامی لوگوں نے کیا کام کردیا؟ جان کر ہر مسلمان دکھی ہوجائے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ینگون (نیوز ڈیسک) میانمر میں مقامی شدت پسندوں نے حکومتی آشیر باد سے روہنگیا مسلمانوں کے گھر جلا دئیے، ان کے ہزاروں نوجوانوں اور بچوں کو قتل کر دیا اور خواتین کی عصمت دری کی، لیکن اس کے باوجود ان ظالموں کا جی نہیں بھرا۔ ان کی سفاکی کا اندازہ کیجئیے کہ جب ملائیشیا نے مظلوم روہنگیا مسلمانوں کے لئے امدادی سامان بھیجا تو اس کے خلاف بھی احتجاج کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے۔

اوپن مارکیٹ، روپے کے مقابل ڈالر کی قیمت میں 10 اور پاﺅنڈ 50 پیسے کی کمی

ویب سائٹ UPI.COMکی رپورٹ کے مطابق ملائیشیا سے ایک بحری جہاز روہنگیا مسلمانوں کے لئے امدادی سامان لے کر میانمر کی تھیلاوا بندرگاہ پر پہنچا تو وہاں پہلے ہی سینکڑوں شدت پسند احتجاج کرنے کے لئے جمع ہو چکے تھے۔ یہ لوگ ”روہنگیا مسلمانو، میانمر سے نکل جاﺅ“ کے نعرے لگارہے تھے اور دھمکیاں دے رہے تھے کہ مسلمانوں کے لئے آنے والے امدادی سامان کو میانمر میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ امدادی سامان لانے والا بحری جہاز ’ناٹیکل عالیا‘ میانمر کے دارالحکومت کی بندرگاہ پر لنگر انداز ہوا تھا۔ یہ بحری جہاز میانمر میں روہنگیا مسلمانوں کے لئے 500 ٹن امدادی اشیاءاتارنے کے بعد بنگلا دیش روانہ ہو گا، جہاں روہنگیا مسلمان ہزاروں کی تعداد میں پناہ گزین ہیں۔

واضح رہے کہ روہنگیا مسلمان گزشتہ ایک دہائی سے شدت پسند اکثریت کے مظالم کا شکار ہیں۔ گزشتہ سال اکتوبر سے لے کر اب تک 66 ہزار سے زائد روہنگیا مسلمان اپنی جان اور عزت بچانے کے لئے میانمر چھوڑ کر بنگلہ دیش جاچکے ہیں۔ ملائیشیا نے ان مظلوموں کی کسمپرسی کے پیش نظر ان کے لئے امدادی سامان کا بحری جہاز بھیجا ہے، مگر بدقسمتی سے باقی مسلم ممالک اس معاملے سے لاتعلق نظر آتے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی