پھینٹی کھاؤ،بیٹا پاؤ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟

پھینٹی کھاؤ،بیٹا پاؤ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟
پھینٹی کھاؤ،بیٹا پاؤ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ماسکو (مانیٹرنگ ڈیسک)گھریلو تشدد کم و بیش ہر ملک میں عام پایا جانے والا مسئلہ ہے اور دنیا اس پر قابو پانے کے لئے کوشاں ہے، مگر دوسری جانب ایک متنازع سائنسدان نے اس شرمناک فعل کو نہایت مفید قرار دے کر ایک نیا ہنگامہ کھڑا کر دیا ہے۔ماسکو ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق روس کے بڑے اخبارات میں شمار ہونے والے اخبار ’کومسو مولسکایا پرآڈا‘ میں حال ہی میں ایک مضمون شائع ہوا ، جس میں ایک تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے بتایاگیا کہ جن خواتین کو گھریلو تشدد کا سامنا کرنا پڑتا ہے ان کے ہاں بیٹے کی پیدائش کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ مضمون نگار نے اسے گھریلو تشدد کا ایک اہم فائدہ قرار دیا۔ یاروسلاف کوروباتوف نامی کالم نگار نے لکھا ’’صدیوں تک تو خواتین اس محض اس مقولے پر مطمئن رہی ہیں کہ ’اگر وہ تمہاری پٹائی کرتا ہے تو سمجھو وہ تم سے محبت کرتا ہے‘ لیکن اب ایک نئی سائنسی تحقیق نے انہیں تشدد کرنے والے خاوند پر فخر کرنے کا موقع فراہم کردیا ہے۔ اس تحقیق کے مطابق ماہرین حیاتیات نے تصدیق کردی ہے کہ تشدد کا سامنا کرنے والی خواتین زیادہ فائدے میں ر ہتی ہیں کیونکہ ان کے ہاں بیٹوں کی پیدائش کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4