پتوکی ،آبیانہ کے ڈیفالٹر زکی جائیدادیں ضبط،نادہندگان میں تشویش کی لہر

پتوکی ،آبیانہ کے ڈیفالٹر زکی جائیدادیں ضبط،نادہندگان میں تشویش کی لہر

لاہور(اپنے نمائندے سے)محکمہ ریونیو میں زرعی زمینوں کی کاشت کے دوران آبیانہ اور تاوان کی مد میں ڈیفالٹر پائے جانیوالے نادہندگان سے ریکوری کیلئے نیا فارمولا تیار،اسسٹنٹ کمشنر پتوکی شاہ رخ خان نیازی نے 19ڈیفالٹر مقامی گاؤں کے جدی مالکان اور نمبرداروں کی جائیدادیں بحق سرکار ضبط کروا دی صوبے بھر میں بورڈ آف ریونیو کے نادہندگان میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ،اسسٹنٹ کمشنر کے اس اقدام کے خلاف احتجاج ،اگر اب بھی ریکوری نہیں جمع کروائیں گے تو ان کی زمینیں نیلام کرکے حکومتی خزانے میں ریونیو جمع کروایا جائے گا،مزید معلوم ہوا ہے کہ کمشنر لاہور ڈویژن کی حدود میں تحصیل پتوکی کے اسسٹنٹ کمشنر شاہ رخ خان نیازی نے آبیانہ اور تاوان کی مد میں لاکھوں روپے کے نادہندگان سے ریونیو اکٹھا کرنے کے لئے نیا راستہ متعارف کروا دیا ہے جس کے تحت گزشتہ روز تحصیل پتو کی میں واقع 19سے زائد ایسے ڈیفالٹر زرعی جائیداد مالکان جن پر سالہا سال سے لاکھوں روپے کی ریکوری پینڈنگ چلی آرہی تھی کے خلاف قبل ازیں دفعہ 82کے تحت کارروائی کرتے ہوئے مقدمات درج ہوئے پھر بعد ازاں دفعہ 83کی کارروائی کرتے ہوئے فصل اور زرعی زمین کھڑے ٹریکٹر قبضے میں لئے اور 19سے زائد ڈیفالٹر اراضی مالکان کی جائیددیں بحق سرکاری ضبط کروا دی ہیں اس حوالے سے اسسٹنٹ کمشنر پتو کی شاہ رخ خان نیازی نے روزنامہ پاکستان کو موقف دیا کہ اگر اب بھی نادہندگان نے واجبات کی ادائیگی نہ کی تو لینڈ ریونیو ایکٹ کی دفعہ 88کے تحت کارروائی کرتے ہوئے رقبہ کی نیلامی کرکے سرکاری خزانے میں ریونیو جمع کروایا جائے گا جو کہ فی مالک اراضی لاکھوں روپے بنتا ہے اور یہ سالہا سال سے التواء کا شکار ہے ،بورڈ آف ریونیو کے ذرائع نے بتایا کہ صوبے بھر میں آؓبیانہ اور تاوان کی مد میں کروڑوں روپے کے واجپات نادہندگان سے وصول کرتے ہیں بعض زرعی مالکان انتہائی بااثر اور سیاسی گھرانے سے وابستگی کے باعث واجب الادا سرکاری فیس جمع نہیں کرواتے اور کئی سالوں سے یہ سلسلہ جاری ہے تاہم جو کارروائی اسسٹنٹ کمشنر پتوکی نے کی ہے اگر صوبے بھر میں دفعہ 83اور 88کے تحت کارروائی کی جائے تو حکومتی خزانے میں کروڑوں کا ریونیو جمع ہو سکتا ہے قبل ازیں کارروائی نہ کرنے سے یہ بھی معلوم ہوتا ہے کہ زیادہ تر اسسٹنٹ کمشنرز لینڈ ریونیو ایکٹ سے ناواقف ہیں جس کے سبب ایسی کارروائی نہیں کی جاسکتی ہے دوسری جانب پتوکی میں نادہندگان مالک اراضی اراضی نے اسسٹنٹ کمشنر کے ان اقدامات پر شدید احتجاج کیا ہے اور اس کو غیر قانونی اقدام قرار دیتے ہوئے اعلیٰ عدالتوں میں جانے کی دھمکی دی ہے ۔

مزید : صفحہ آخر