تنخواہوں سے کنٹریکٹ الاؤنس کٹوتی روکنے کے حوالے سے حکم امتناعی جاری

تنخواہوں سے کنٹریکٹ الاؤنس کٹوتی روکنے کے حوالے سے حکم امتناعی جاری

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ نے مستقل ہونے والے محکمہ تعلیم کے پروفیسرز اور لیکچرارز کی تنخواہوں سے کنٹریکٹ الاؤنس کی کٹوتی روکنے کے حوالے سے حکم امتناعی جاری کردیاہے،عدالت نے پنجاب حکومت ، سیکرٹری تعلیم اورسیکرٹری فنانس پنجاب سمیت دیگر فریقین کونوٹس جاری کرتے ہوئے 17مارچ کوجواب طلب کرلیاہے ۔جسٹس شجاعت علی خان نے پروفیسرریاض حسین سمیت محکمہ تعلیم کے مستقل ہونے والے دیگر32لیکچرارز کی درخواستوں پرسماعت کی۔ درخواست گزاروں کی جانب سے صفدرشاہین پیرزادہ ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ2002ء سے 13محکمہ تعلیم میں کنٹریکٹ پرلیکچراربھرتی ہوئے ۔مستقلی کے بعدمحکمہ فنانس نے پروفیسرز اورلیکچرارز کی تنخواہوں سے کنٹریکٹ الاونس کی کٹوتی شروع کردی۔ اسی نوعیت کی درخواستوں پرعدالت عالیہ بھی حکم امتناعی جاری کرچکی ہے۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ مستقل ہونے والے لیکچرارز کے کنٹریکٹ الاونس کی کٹوتی کو کالعدم قراردیا جائے۔عدالت نے دلائل سننے کے بعد حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے پنجاب حکومت اورسیکرٹری فنانس سے 17مارچ کوجواب طلب کرلیاہے۔

مزید : صفحہ آخر