سی پیک شروع ہونے سے قبل پاکستان کی جغرافیا ئی اہمیت بڑھ گئی : نواز شریف

سی پیک شروع ہونے سے قبل پاکستان کی جغرافیا ئی اہمیت بڑھ گئی : نواز شریف

 اسلام آباد(خصوصی رپورٹر) وزیر اعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ سی پیک شروع ہونے سے پاکستان کی جغرافیائی اہمیت بڑھ گئی ہے۔مجھے خوشی ہے کہ متعدد ملکوں کی بحریہ مل کر امن مشقیں کررہی ہے ۔ پاک بحریہ کی کثیرالملکی امن مشقوں پر پیغام میں انہوں نے کہا کہ مشقوں میں سمندرپارسے شرکت کرنیوالوں کاگرمجوشی سے خیر مقدم کرتے ہیں،خوشی ہے امن مشقوں کے ذریعے پاک بحریہ میری ٹائم کے شعبے میں پل کاکرداراداکرے گی۔وزیر اعظم نے پیغام میں کہا کہ خوشی ہے کہ مشرق اورمغرب سے بحری افواج ایک پلیٹ فارم پراکٹھی ہوئیں،ان کا کہنا تھاکہ سی پیک پورے خطے کے لئے گیم چینجر ثابت ہوگا۔ علاوہ ازیں اسلام آباد میں گورنر سندھ محمد زبیر ، بلوچستان کے وزیر اعلیٰ سردار ثناء اللہ زہری ، سابق وزیر اعلیٰ عبدالمالک بلوچ اور وفاقی وزیر میر حاصل بزنجو سے بات چیت کر تے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت بلوچستان اور سندھ میں ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے۔ مشاورت سے کراچی میں امن بحال کیا ، آج ماحول بہت بہتر ہوچکا ہے۔۔ ملاقاتوں میں دونوں صوبوں میں جاری ترقیاتی منصوبوں اور ملک کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ گورنر سندھ سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت دیہی اور شہری سندھ کے علاقوں کی ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے۔ صوبے میں توانائی ، انفراسٹرکچر اور سماجی شعبے کے منصوبے شروع کئے۔ تمام فریقوں کی مشاورت سے کراچی میں امن بحال کیا جس کی وجہ سے اب امن و امان کی صورتحال بہت بہتر ہوچکی ہے۔ وفاقی حکومت سندھ میں توانائی کے کئی منصوبوں پر کام کر رہی ہے۔ پورٹ قاسم پاور پلانٹ ، اینگرو تھر ، چھمپر ونڈ اور تھر مائنز کے منصوبے زیر تکمیل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کراچی حیدرآباد موٹر وے منصوبہ تیار کیا ، کراچی سرکلر ریلوے منصوبے کو بھی سی پیک میں شامل کیا ، گرین لائن ماس ٹرانزٹ منصوبے پر تیزی سے کام جاری ہے ، وفاقی حکومت کے فور اور لیاری ایکسپریس وے منصوبوں میں بھی تعاون کر رہی ہے۔ وزیر اعظم نواز شریف نے محمد زبیر کو ہدایت کی کہ گورنر کی حیثیت سے وفاق اور سندھ کے درمیان پل کا کردار ادا کریں۔ گورنر سندھ محمد زبیر نے وزیر اعظم کے اعتماد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ وزیر اعلیٰ بلوچستان سردار ثناء اللہ زہری سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ماضی کی حکومت نے ہمیشہ بلوچستان کو نظر انداز کیا ، موجود دور میں صوبے کی ترقی پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے ، موجودہ حکومت بلوچستان میں سڑکوں اور توانائی کے شعبوں میں سرمایہ کاری لا رہی ہے اور بلوچستان کو ترقی کا مرکز بنا دیا ہے۔ سردار ثناء اللہ زہری نے بلوچستان کے عوام اور حکومت کے تعاون پر وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔ اس کے بعد نیشنل پارٹی کے رہنما وفاقی وزیر حاصل بزنجو اور سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان عبدالمالک بلوچ نے وزیر اعظم سے الگ ملاقات کی۔ ملاقات میں بلوچستان کی اتحادی حکومت ، ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال اور بلوچستان کے ترقیاتی منصوبوں کی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

نوازشریف

اسلام آباد(اے این این) وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ کراچی میں امن کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کے اتفاق سے کام کررہے ہیں اس لیے گورنر سندھ وفاقی و صوبائی حکومتوں کے مابین پل کا کردار ادا کریں۔ترجمان وزی راعظم کے مطابق جمعہ کو وزیراعظم ہاؤس اسلام آباد میں گورنر سندھ محمد زبیر نے وزیراعظم نوازشریف سے ملاقات کی۔ اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت سندھ کے دیہی و شہری علاقوں کی ترقی کے لیے کوشاں ہے، گرین لائن ماس ٹرانزٹ منصوبے پر کام پوری رفتار سے جاری ہے جب کہ اسٹیک ہولڈرز کے اتفاق سے کراچی میں امن کے لیے کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کے لوگوں کے لیے توانائی، انفراسٹرکچر اور سماجی شعبوں میں کئی منصوبے شروع کیے، کے 4 اور لیاری ایکسپریس وے منصوبے بھی وفاقی حکومت کے تعاون سے چل رہا ہے جبکہ ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل کے لیے گورنر وفاقی و صوبائی حکومتوں کے مابین پل کے طور پر کام کریں۔اس موقع پر گورنر سندھ محمد زبیر نے اعتماد کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ سندھ کے عوام کی بہتری کے لئے کام کروں گا۔اس سے قبل وزیراعظم سے وزیراعلی بلوچستان ثنا اللہ زہری نے ملاقات کی جس میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بلوچستان کوماضی میں نظر انداز کیا گیا جبکہ حکومت صوبے کی ترقی پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے، ہم نے شاہراتی اور توانائی کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے ذریعے بلوچستان کو ترقی کا حب بنا دیا۔

نواز شریف

مزید : صفحہ اول