وزیر اعظم فاٹا اصلاحات دباؤ میں آکر معاملہ کو طول دینے سے گریز کریں : پروفیسر ابراہیم

وزیر اعظم فاٹا اصلاحات دباؤ میں آکر معاملہ کو طول دینے سے گریز کریں : پروفیسر ...

چارسدہ(بیورو رپورٹ)جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر پروفیسر ابراہیم خان کاکہنا ہے کہ وزیر اعظم مولانا فضل الرحمان اور محمود خان اچکزئی کے دباؤ میں آ کر فاٹا اصلاحات کے معاملہ کو طول نہ دیں اور فاٹا کے عوام کی خواہشات کو مدنظر رکھ کر فاٹا کو فوری طور پر خیبر پختونخوا میں ضم کیا جائے تاکہ تاکہ آئندہ صوبائی اسمبلی میں فاٹا کو نمائندگی مل سکے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز اسلامی چارسدہ میں جماعت اسلامی کے ماہانہ تربیتی اجتماع سے خطاب اور میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ ارکان کے تربیتی اجتماع سے جماعت اسلامی کے ضلعی امیر محمد ریاض خان نے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پر جمعیت علماء اسلام سے تعلق رکھنے والے مولانا قاری عابد جان اور قاری موسم خان نے جماعت اسلامی میں شمولیت کا اعلان کر دیا۔ پروفیسر ابراہیم خان کا کہنا تھا کہ فاٹا کے حوالے سے مولانا فضل رحمان اور محمود خان اچکزئی کا مؤقف سمجھ سے بالا تر ہے ، فاٹا کے عوام پر انکے مرضی کے خلاف کوئی فیصلہ مسلط نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیشنل ایکشن پلان بھی فاٹا اصلاحات میں سب سے بڑی روکاوٹ ہے۔ کوئٹہ واقعے کے بعد جسٹس فائز عیسیٰ کے رپورٹ سے ثابت ہے کہ نیشنل ایکشن پلان مبہم ہے اور اس کا از سر نو جائزہ لینے کی ضرورت ہے۔ پروفیسر ابراہیم کا کہنا تھا کہ پاکستان اور اس میں رہنے والی قوم غریب یا فقیر نہیں لیکن ہمارے خائن حکمرانوں کی کرپشن اور لوٹ مار نے اس قوم کو غربت کی دلدل میں دھکیل دیا ہے ، اس وقت قوم ایک بڑے امتحان سے گزر رہی ہے اگر قوم نے آئندہ انتخابات میں اپنی قومی ذمہ داری پوری کر لی اور صحیح فیصلہ کیا تو پاکستان کا مستقبل تابناک ہوگا، ان کا کہنا تھا کہ حکمرانوں کی وجہ سے ہم دوسروں کے غلام بن چکے ہیں قومی اسمبلی میں دو دفعہ قراردایں منظور ہو گئیں کہ ہماری خارجہ، داخلی اور دفاعی پالیسی کو امریکہ کے اثر سے باہر نکالا جائے لیکن ان قراردادوں پر آج تک عمل نہیں ہوا۔ایک سوال کے جواب میں پروفیسر ابراہیم خان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ اور انکی پالیسیاں امریکہ کی تباہی کا باعث بنیں گے ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کیلئے سویت یونین کا گورباچوف ثابت ہوگا۔ مولانا مودودی کی جانب سے سویت یونین کے حوالے سے کی گئی پیشن گوئی درست ثابت ہوئی امریکہ کے بارے میں پیشن گوئی بھی درست ثابت ہو گی۔ ارکان کے تربیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے ضلعی امیر محمد ریاض خان نے کہا کہ قبائیل کو بیورو کریسی کے رحم و کرم پر نا چھوڑا جائے ، قبائیلی اصلاحات کو وفاقی کابینہ کے ایجنڈہ سے نکالنا افسوس ناک امر ہے انہوں چارسدہ کے علاقہ تنگی میں جمعیت علماء اسلام کے دینی مدرسے کو بند کرنے کے اقدام پر اپنے رد عمل میں کہا کہ مدرسے کے بندش کی وجوہات سے عوام کو اگاہ کیا جائے شک کی بنیاد پر مدارس کی بندش قابل مذمت اقدام ہوگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر