پرائیویٹ تعلیمی اداروں کا شرح خواندگی میں اضافہ کرنے میں کلیدی کردار ہے : ہمایون خان

پرائیویٹ تعلیمی اداروں کا شرح خواندگی میں اضافہ کرنے میں کلیدی کردار ہے : ...

 درگئی (نمائندہ پاکستان) پاکستان پیپلز پارٹی خیبر پختون خواکے صوبائی صدر و سابق وزیر خزانہ انجنیئر ہمایون خان نے کہا ہے کہ پرائیویٹ تعلیمی ادارے ملک کی شرح خواندگی بڑھانے میں کلیدی کردار اداء کررہے ہیں ۔ پبلک سیکٹر کے پرائمری سکول طالب علم پر سالانہ 825روپے خرچ ہورہے ہیں اور ان کو سہولیات کی فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہونی چاہئے۔ پرائیویٹ تعلیمی ادارے کم فیس لیکر گھر کی دہلیز پر بہتر تعلیم دینے کا تسلسل جاری رکھیں۔ ان خیالات کا اظہار انہون نے الائنس لرننگ سکولز درگئی کیمپس کے افتتاح کے موقع پر منعقدہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہون نے کہا کہ تعلیم کو اہمیت دینے سے قومی ترقی کا رفتار بڑھ سکتا ہے اور اس عمل میں اساتذہ ، والدین اور اداروں کو طلباء کی بہتر تعلیم و تربیت پر بھر پور توجہ دینی چاہئے۔ انہون نے کہا کہ اپنے دور اقتدار میں صوبہ بھر کے تعلیمی اداروں میں سہولیات کے فقدان دور کرنے کے لئے خطیر رقم خرچ کرچکے ہیں ۔ تقریب سے پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر و چیرمین ڈیڈک مالاکنڈ سید محمد علی شاہ باچہ ، چیرمین الائنس سکولز جنید خان ، ڈائریکٹر درگئی کیمپس محمد ابراہیم ، پرنسپل میڈیم عزراء ، نے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پرتحصیل ناظم درگئی عبد الرشید بھٹو ، تحصیل نائب ناظم حاجی اعظم جھاڑے ، سابقہ امیدوار پی کے 98یاسر خان ایڈوکیٹ، ضلعی کونسلرز و تحصیل کونسلر حاجی محمد طیب ، محمد سفید خان ، حمید نواز ختک ، رشید احمد قاضی ، پیر قدیم خان ، محمد یوسف خان ، احسان اللہ خان ، سبز علی خان ، فضل حق ، سیف للہ شہاب اورکثیر تعداد میں علاقے کے والدین و شہری شریک ہوئے۔ تقریب سے اپنے خطاب میں ایم پی اے سید محمد علی شاہ باچہ نے کہا کہ انہون نے اپنے 14سالہ دور اقتدار میں پی کے 98کے تمام سپماندہ علاقوں میں تعلیمی اداروں کے قیام اور پہلے سے قائم تعلیمی اداروں میں سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کی بھر پور کوشش کی ہے اور تعلیم کا عمل والدین ، اساتذہ کرام اور طلباء کے ٹرائی اینگل پر مشتمل ہے اس لئے ضروری ہے کہ سکول میں اساتذہ اور گھر میں والدین نئی نسل کی تعلیم و تربیت پر خصوصی توجہ دیں ۔ انہون نے پی کے 98کے تمام پرائیویٹ سکولز اور سرکاری سکولوں کے طلباء و طالبات کو بہتر سیکورٹی فراہم کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ ایک اچھے شہری ہونے کے ثبوت دیکر نئی نسل کو دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے شکار ہونے سے بچاناہے تاہم انہون نے اس سلسلے میں سیکورٹی اداروں کے ساتھ ساتھ شہریوں سے بھی اپنے فرائض پوری کرنے کی اپیل کی ۔ تقر۸یب کے دوران سکول کے بچوں نے پاکستان کی سلامیت ، وطن کیحب الوطنی اور دیگر موضوعات پر تقاریر بھی پیش کئے تقریب کے شرکلاء سے خوب داد وصول کی۔

B

مزید : پشاورصفحہ آخر