گریڈ 19 کے آفسر سے ریکوری کے احکامات معطل

گریڈ 19 کے آفسر سے ریکوری کے احکامات معطل

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ نے عدالتی احکامات پر گریڈ19کی پوسٹ پرمستقل ہونے والے اعلی ا فسرسے ریکوری کے احکامات معطل کرتے ہوئے خیبرپختونخوا کے چیف سیکرٹری اورسیکرٹری فنانس سے جواب مانگ لیاہے عدالت عالیہ کے جسٹس یونس تہیم اورجسٹس غضنصرخان پرمشتمل دورکنی بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز درخواست گذارامان اللہ کی جانب سے آصف یوسفزئی ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائررٹ پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذارڈیرہ اسماعیل خان میں کمٹرولر اکاؤنٹس تھا اورگریڈ19کی ایکٹنگ پوسٹ پرکام کررہاتھا بعدازاں اس نے سروس ٹربیونل میں کیس کیاکہ گریڈ19کی مراعات مستقل طورپردی جائیں اور ٹربیونل نے اس کے حق میں فیصلہ دیاجس پراسے مراعات دے دی گئیں تاہم بعدازاں محکمہ خزانہ نے اس سے ریکوری کانوٹس دیاکہ ایک لاکھ20ہزار روپے غیرقانونی وصول کئے ہیں واپس کئے جائیں جبکہ سرزنش بھی کی انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اب دوسراشوکاذنوٹس جاری کیا گیاہے کہ کیوں نہ سزامیں اضافہ کیا جائے جس کاکوئی قانونی و آئینی جواز نہیں بنتا لہذا شوکاذ نوٹس کالعدم قرار دیا جائے فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد شوکاذنوٹس معطل کرکے چیف سیکرٹری اورفنانس سیکرٹری کو نوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر