ٹرمپ نے ہتھیار ڈال دیے ،مسلمانوں کے امریکا داخلے پر پابندی کیخلا ف عدالتی فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا اعلان

ٹرمپ نے ہتھیار ڈال دیے ،مسلمانوں کے امریکا داخلے پر پابندی کیخلا ف عدالتی ...
ٹرمپ نے ہتھیار ڈال دیے ،مسلمانوں کے امریکا داخلے پر پابندی کیخلا ف عدالتی فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا اعلان

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن ) ڈونلڈ ٹرمپ نے7بڑے مسلمان ممالک کے باشندوں کی امریکا میں داخلے پر پابند ی کے خلاف عدالتی فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا اعلان کر دیا ۔

انڈیپنڈنٹ کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ نے مسلمانوں کے عدالتی فیصلے پر مسلمانوں کے حق میں ہتھیار ڈال دیے ۔ ریاست فلوریڈا جانے سے قبل میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مسلمان ممالک کے باشندوں پر امریکا میں پابندی کے خلاف عدالتی فیصلوں کو سپریم کورٹ میں نہیں لیجایا جائے گا ۔

اس سے قبل ٹرمپ نے اپنے ٹویٹر پیغام میں”تمہیں عدالت میں دیکھوں گا، ہماری قوم کی سیکیورٹی خطرے میں ہے“جیسے دھمکی آمیز الفاظ استعمال کرتے ہوئے عزم ظاہر کیا تھا کہ انکے وکلاءسپریم کورٹ میں دلائل دیکر مقدمہ جیت لیں گے مگر اب ردعمل سے ڈرتے ہوئے وائٹ ہاﺅس نے قانونی جنگ ختم کرنے کا اعلان کر دیا ہے ۔

شادی کے سیزن میں اس چیز سے بال دھونے سے ان میں ایسی چمک آئے گی کہ سب آپ کی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائیں گے

یہ اعلان اس وقت سامنے آیا ہے جب ٹرمپ کی جانب سے کہا گیا تھا کہ وہ امیگریشن کے حوالے سے مسائل کو حل کرنے کیلئے نیا یا ترمیم شدہ ایگزیکٹیو آرڈر متعارف کرائیں گے ۔

ایسوسی ایٹ پریس کے مطابق امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ وہ کسی بھی قانونی جنگ کو جیتنے کیلئے پر امید ہیں مگر متبادل حکمت عملیوں کے بار ے میں سوچ رہے ہیں ۔”ہمارے پاس نئے حکم نامے سمیت دیگر تجاویز بھی زیر غور ہیں“۔ ہمیں سیکیورٹی کی وجوہات کیلئے رفتار کی ضرورت ہے تاکہ اسے بہت بہتر کیا جا سکے جو اگلے ہفتے کے دوران کسی بھی روز کیا جا سکتا ہے مگر میں لوگوں کو حیران کرنا پسند کرونگا۔

TapMad نے ہمہ وقت سرگرم رہنے والوں کے لئے انٹرٹینمنٹ کی نئی دنیا متعارف کروادی

ضرور پڑھیں: بے ادب بے مراد

نئے حکم نامے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر ٹرمپ نے جواب دیا کہ سیکیورٹی کے اقدامات کیلئے ہم بہت سخت اور ٹھوس جانچ پڑتال کر رہے ہیںجنہیں میں بہت ہی ٹھوس جانچ پڑتال کا نام دونگا اور ہم سیکیورٹی کے معاملے پر بہت سخت حکمت عملی اپنائیں گے ۔”ہم اپنے ملک میں ایسے لوگوں کو داخل ہونے دیں گے جو یہاں اچھے مقاصد کیلئے رہنا چاہتے ہوں “۔

فیڈرل اپیلس کورٹ کی جانب سے ایگزیکٹیو آرڈر مسترد ہونے کے ایک روز بعد ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ متنازع حکم نامے کو تبدیل کرنے کیلئے کچھ نیا فیصلہ لائیں گے ۔

مزید : بین الاقوامی