رواں سال :بھارت کی سونے کی درآمد میں خریداروں پر ٹیکس میں اضافہ و نئے ٹرانسپیریسی قوانین کی وجہ سے 800ٹن کم رہنے کا امکان

رواں سال :بھارت کی سونے کی درآمد میں خریداروں پر ٹیکس میں اضافہ و نئے ...
رواں سال :بھارت کی سونے کی درآمد میں خریداروں پر ٹیکس میں اضافہ و نئے ٹرانسپیریسی قوانین کی وجہ سے 800ٹن کم رہنے کا امکان

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ممبئی(آن لائن) بھارتی ماہرین نے کہا ہے کہ رواں سال 2018 ء کے دوران بھارت کی سونے کی درآمد 800 ٹن سے کم رہنے کا امکان ہے جسکی وجہ اس کی خریدار پر ٹیکسوں میں اضافہ اور نئے ٹرانسپیریسی قوانین ہیں۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق ورلڈ گولڈ کونسل کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ رواں سال بھارت کی سونے کی درآمد 700 سے 800 ٹن کے قریب رہنے کی توقع ہے جو 10سال کی اوسط 840 ٹن سے کم ہے۔2017 ء کے دوران 727 ٹن سونا درآمد کیا گیا تھا،سونے کی درآمد میں کمی کی اہم وجہ 2017 ء میں حکومت کی جانب سے عائد کیا گیا بھاری جی ایس ٹی ہے۔واضح رہے کہ بھارت دنیا بھر میں سونے کے استعمال کے حوالے سے دوسرا بڑا ملک ہے،تاہم وہاں ٹیکسوں میں اضافے کے باعث خریداری میں کمی سے اس دھات کے نرخ متاثر ہوں گے، جن میں وسط دسمبر سے اب تک 8 فیصد تک اضافہ ہوچکا ہے۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

مزید : بین الاقوامی /بزنس