حالیہ بارشوں کے بعد چنے کی پیداوارمیں اضافہ متوقع ہے،دانیال احمد

حالیہ بارشوں کے بعد چنے کی پیداوارمیں اضافہ متوقع ہے،دانیال احمد

لاہور(اے پی پی ) پلسز امپورٹر اینڈ ایکسپورٹر ایسوسی ایشن پنجاب کے سیکرٹری دانیال احمد نے کہا ہے کہ قابل کاشت علاقوں میں چنے کی کاشت میں ایک چوتھائی سے بھی زیادہ کمی کے باوجود بارشوں کے حالیہ دور کے بعد اس کی پیداوار رواں سال 0.4 سے0.5 ملین ٹن تک متوقع ہے۔دانیال احمد کے مطابق گزشتہ سال کم بارشوں کے باعث چنے کی پیداوار0.3 ملین ٹن رہی جبکہ اس اعتبار سے گزشتہ دس سالوں کے دوران شدید خشک سالی کا سامنا رہا مگر 2012ء میں پنجاب میں دالوں کی کاشت والے علاقوں میں زیادہ بارشوں کی وجہ سے چنے کی پیداوار0.18 ملین ٹن رہی تھی۔چنے کی قیمتوں کی حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ بھارت دنیا میں دالوں کا بڑا خریدار ہے مگر اس کی جانب سے دالوں کی درآمد پر مختلف ٹیکسز اور ڈیوٹیز کے نفاذ سے عالمی سطح پر حالات میں خرابی پیداہوئی ہے جس سے دالوں کی مارکیٹ پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔دالوں کی مقامی طلب کے حوالے سے دانیال احمد کا کہنا تھا کہ ملک میں چنے کی کھپت ایک محتاط اندازے کے مطابق رواں سال0.55 ملین ٹن متوقع ہے اور ہمیں امید ہے کہ 0.4سے0.5ملین ٹن کی پیداوار اور ذخیرہ شدہ کھیپ مقامی ضرورت کو پورا کرنے کیلئے کافی ہیں اور فی الوقت اس کی گزشتہ سال کی نسبت بڑے پیمانے پر درآمد کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ گزشتہ سال2018میں مارچ کے مہینے تک چنے کے تقریبا 8ہزار کنٹینرز درآمد کئے گئے یعنی ایک لاکھ80ہزار ٹن کموڈیٹی لائی گئی۔

مزید : کامرس