استعمال شدہ تیل دوبارہ فروخت کرنیوالا گینگ ٹریس ‘ تحقیقات شروع

استعمال شدہ تیل دوبارہ فروخت کرنیوالا گینگ ٹریس ‘ تحقیقات شروع

ملتان(سٹاف رپورٹر)پنجاب فوڈ اتھارٹی کی ویجیلینس ٹیموں نے بائیو ڈیزل کے نام پر استعمال شدہ تیل دوبارہ فروخت کرنے والا گینگ پکڑ لیا۔اتوار کے روزڈی جی فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں راولپنڈی سے شروع کیے جانیوالے آپر یشن کے بعد لاہور، اوکاڑہ اور بہاولپور کے ایجنٹ پکڑلیے(بقیہ نمبر35صفحہ7پر )

گئے۔بھاری مقدار میں جانوروں کی آلائشیں اور مضر صحت آئل برآمد کیا گیا۔ بائیو ڈیزل کے نام پر استعمال شدہ تیل دوبارہ فروخت کرنے والا گینگ بلآخر پنجاب فوڈ اتھارٹی کی گرفت میں آگیا۔کیپٹن (ر)محمد عثمان کی سربراہی میں راولپنڈی سے شروع ہونیوالے آپریشن کا دائرہ کار صوبہ بھر میں پھیلنے کے بعدلاہور، اوکاڑہ ر اور بہاولپور کے ایجنٹ بھی پکڑے گئے۔ یاد رہے کہ راولپنڈی کے 2پوائنٹس سے مضر صحت تیل پکڑے جانے پر ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے آپریشن کا دائرہ کار صوبہ بھر میں پھیلانے کی ہدایت کی تھی۔کارروائیوں کے دوران لاہور سے 4000کلو آلائشوں سے تیار کردہ 6600لیٹر استعمال شدہ مضر صحت آئل برآمد کیا گیا ۔ اس سے قبل راولپنڈی سے 6ہزار954لٹر استعمال شدہ تیل ضبط کر کے ملزمان کیخلاف مقدمہ درج جبکہ2افراد کوگرفتار کروایا گیا۔ شیخ عبدالقادر اینڈ سنزاورعابد آئل ڈیلر راولپنڈی کو استعمال شدہ تیل فروخت کرنے پر سربمہر کیا گیا۔اعجاز فیٹ رینڈرنگ یونٹ کو نکلے تیل کی فروخت کے ریکارڈ اورلائسنس کی عدم موجودگی پر سیل کیا گیا۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ چیکنگ کے دوران افضل بائیو ڈیزل اوربائیو سپیڈ کولیکشن سنٹر بہاولپور کی پروڈکشن تادم اصلاح بند کر دی گئی ہے۔ استعمال شدہ تیل کی فروخت میں میں بائیو سپیڈ کولیکشن سنٹر بہاولپورکے ملوث ہونے کی مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ استعمال شدہ اور فیڈ رینڈرنگ سے حاصل ہونے والا تیل صرف بائیو ڈیزل بنانے میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ایسے آئل کی خریدو فروخت کا مکمل ریکارڈ رکھنا ہر ڈیلر اور پروڈکشن یونٹ کے لیے لازم ہے۔ کیپٹن(ر)محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ استعمال شدہ اور فیٹ رینڈرنگ سے نکلا تیل انسانوں میں کینسر سمیت متعدد موذی امراض کا باعث بنتا ہے۔پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کی خلاف ورزی کرنے والوں کو کام کرنے کی ہرگزاجازت نہیں دی جائے گی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر