پولیس آفیسر کا اپنی جونیئر کے ساتھ افیئر، دوران ڈیوٹی سڑک کنارے ہی ایسی شرمناک حرکت کردی کہ نوکری سے معطل کردیا گیا

پولیس آفیسر کا اپنی جونیئر کے ساتھ افیئر، دوران ڈیوٹی سڑک کنارے ہی ایسی ...
پولیس آفیسر کا اپنی جونیئر کے ساتھ افیئر، دوران ڈیوٹی سڑک کنارے ہی ایسی شرمناک حرکت کردی کہ نوکری سے معطل کردیا گیا

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) برطانیہ میں پولیس آفیسر اور جونیئر خاتون افسر کو سرعام جسمانی تعلق قائم کرنے پر نوکری سے معطل کردیا گیا ہے۔

سسیکس پولیس میں چیف انسپکٹر کے عہدے پر تعینات 44 سالہ روب لیٹ شادی شدہ اور 4 بچوں کے باپ ہیں۔ ان کا اپنی جونیئر خاتون افسر 38 سالہ سارہ پورٹر کے ساتھ گزشتہ 18 ماہ سے افیئر چل رہا تھا۔ سارجنٹ سارہ بھی شادی شدہ اور ایک بچی کی ماں ہے۔

پولیس کے ان جوانوں پر الزام ہے کہ اپنے 18 ماہ کے افیئر کے دوران انہوں نے جسمانی قرابت کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیا۔ کئی بار وہ سڑک کنارے ہی شروع ہوجاتے تھے جبکہ بعض اوقات تھانے میں ہی شرمناک حرکات کے مرتکب قرار پاتے تھے۔ پولیس ڈیپارٹمنٹ کا کہنا ہے کہ دونوں اہلکار پوری کوشش کرتے کہ ان کی ڈیوٹی ایک ساتھ لگے اور اگر کسی طرح ان کی ڈیوٹی ایک ساتھ نہ بھی ہوتی تو بھی وہ کوئی نہ کوئی داﺅ لگا کر ایک ساتھ ڈیوٹی کرتے تھے۔

ایک بار سارجنٹ سارہ کی ڈیوٹی ٹریفک کنٹرول پر لگائی گئی لیکن وہ چیف انسپکٹر روب کے پاس جاپہنچی۔ سارہ کی غیر موجودگی میں ٹریفک کے نظام میں خلل پیدا ہوا اور ایک کار حادثہ پیش آگیا۔ حادثے کے وقت سارہ کو موقع پر موجود ہونا چاہیے تھا لیکن وہ اپنے پریمی کے ساتھ سڑک کنارے کسی اور ہی کام میں مصروف تھی۔

دونوں پولیس اہلکاروں کو فرائض میں غفلت برتنے پر پولیس فورس سے معطل کرکے ان کے خلاف تحقیقات کی جارہی ہیں۔ اگر الزامات ثابت ہوگئے تو دونوں کو ہی اپنی نوکریوں سے ہاتھ دھونے پڑ جائیں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس