بیرونی امداد میں 21،داخلی اخراجات میں 6فیصد کمی،دفاعی اخراجات کیلئے 740ارب ڈالر،ٹرمپ انتظامیہ نے 48کھرب ڈالر کا نیا بجٹ پیش کر دیا

  بیرونی امداد میں 21،داخلی اخراجات میں 6فیصد کمی،دفاعی اخراجات کیلئے 740ارب ...

  



واشنگٹن(اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) ٹرمپ انتظامیہ نے یکم اکتوبر 2020ء سے 30ستمبر2021ء تک جاری رہنے والے آئندہ مالیاتی سال 2021ء کیلئے 48کھرب ڈالر کا بجٹ پیش کر دیا ہے۔ وائٹ ہاؤس نے سوموار کی دوپہر بجٹ تجاویز کا مسودہ صدر ٹرمپ کے دستخط کے بعد کانگریس کا بھیجنے کا اعلان کیا۔ رواں مالی سال میں بجٹ خسارہ گیارہ کھرب ڈالر ہے جبکہ آئندہ مالی سال کے اس بجٹ میں 966ارب ڈالر کا خسارہ تجویز کیا گیا ہے۔ اس بجٹ میں بیرونی امداد میں 21فیصد اور داخلی اخراجات میں 6فیصد کٹوتی تجویز کی گئی ہے۔ یاد رہے کہ رواں بجٹ میں وائٹ ہاؤس کی ایسی ہی سفارشات کو کانگریس نے مسترد کر دیا تھا۔ آئندہ سال کے مجوزہ بجٹ میں دفاعی اخراجات کے لئے 740ارب ڈالر کا مطالبہ کیا گیا ہے اور موجودہ سال کی طرح اس بجٹ میں بھی ٹیکسوں اور شرح سود میں کمی تجویز کی گئی ہے۔ بجٹ حکام کے مطابق چین اور روس جس ترقی پذیر معاشی قوتوں سے خطرات کا سامنا کرنے کے لئے فنڈز میں اضافہ تجویز کیا گیا ہے جبکہ لازمی اخراجات کے پروگراموں میں کمی کر کے بیس کھرب ڈالر کی بچت کی گئی ہے۔ آئندہ سال کے اس بجٹ میں 38کھرب ڈالر کی آمدن کی توقع ظاہر کی گئی ہے۔ معاشی مبصرین نے فوری طور پر ان تجاویز پر رائے دیتے ہوئے بتایا ہے کہ انتخابات کے موجودہ سال میں ڈیمو کریٹک پارٹی کی اکثریت والا ایوان نمائندگان اس بلیو پرنٹ کو اس شکل میں کبھی منظور نہیں کرے گا۔ صدر ٹرمپ 2016ء سے میکسیکو سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کے لئے فنڈز کا مطالبہ کرتے آ رہے ہیں آئندہ مالی سال کے  اس بجٹ میں بھی انہوں نے تعمیراتی کام کے لئے دو ارب ڈالر کا مطالبہ کیا ہے جبکہ گزشتہ برس انہوں نے آٹھ ارب 60کروڑ ڈالر کا تقاضاکیا تھا۔ ڈیمو کریٹک اور ری پبلکن دونوں پارٹیاں انفراسٹرکچر کی تعمیر کو بہت اہمیت دیتے ہیں لیکن آئندہ بجٹ میں اس مقصد کے لئے دس کھرب ڈالر کے مطالبے سے ڈیمو کریٹک پارٹی لگتا ہے اتفاق نہیں کرے گا اور اسے کم کرانے کی کوشش کرے گی صدر ٹرمپ کی انتظامیہ نے آئندہ مالی سال کے لئے بیرونی امداد کی مد میں 44ارب دس کروڑ ڈالر کا مطالبہ کیا ہے جبکہ یہ امداد موجودہ سال میں 55ارب 70کروڑڈالر تھی۔ ایوان نمائندگان کی بجٹ کمیٹی نے آئندہ مالی سال کی بجٹ تجاویز پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”بدقسمتی سے اس میں بھی صدر ٹرمپ نے موجودہ سال کی طرحح تباہ کن اور غیر حقیقی کٹوتیاں کی ہیں۔ ہیلتھ کیئر اور دیگر فلاحی پروگراموں کے بجٹ میں کمی سے عام شہری بری طرح متاثر ہوں گے۔“

امریکی بجٹ

مزید : صفحہ اول