آٹا، چینی چور مافیا قوم کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہی ہے،امیر مقام

آٹا، چینی چور مافیا قوم کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہی ہے،امیر مقام

  



باجوڑ (نمائندہ خصوصی)پاکستان مسلم لیگ (ن) خیبرپختونخوا کے صدر انجینئر امیرمقام نے کہا ہے کہ آٹا، چینی چور مافیا قوم کو لوٹ رہا ہے،معیشت ڈوب رہی ہے لیکن حکمرانوں کے کانوں پرجوں تک نہیں رینگتی کیونکہ انہیں حصہ مل رہا ہے،عوام کا روزگار، کاروبار اور روٹی بند ہے لیکن حکمران کہتے ہیں کہ گھبرانا نہیں کیونکہ ان کا روزگار بہترین جارہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہر روز عمران نیازی، اس کے دوستوں، مشیروں اور وزیروں کی کرپشن کے سکینڈل آرہے ہیں،قوم کی گھبراہٹ انتہاء کو پہنچ چکی ہے کیونکہ معیشت نے ہر کسی کو گھبراہٹ میں ڈال دیا ہے،کرپٹ ٹولہ قومی خزانے اور عوام کے مال پر ہاتھ صاف کرکے بھاگنے والا ہے،میڈیا کو دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ وہ وزیروں کے سکینڈل اور لوٹ مار کی کہانیاں سامنے نہ لائیں،عمران نیازی کے قریبی وزیر اپنی کرپشن کی خبر رکوانے رات کے اندھیرے میں صحافی کے گھر جاتے ہیں،دن میں دھمکیاں دیتے اور کارروائیاں کرتے ہیں اور رات کو صحافیوں کی منتیں کرتے ہیں۔ان خیالات کااظہارانہوں نے اپنے ایک روزہ دورہ بونیر،طوطالئی میں جوان لیگی رہنما اشتیاق کوشادی کی مبارک باد،جوڑمیں لیگی رہنماعبدالرحمان کے حجرے میں کارکنوں سے خطاب،مسلم لیگ(ن)ضلع بونیرکے صدرسرزمین خان کے حجرے میں کارکنوں سے خطاب،جنرل سیکرٹری شاہ بخت روان کے والدکی بیمارپرسی اورسواڑئی میں جعفرشاہ کے حجرے میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انجینئرامیرمقام نے کہاکہ قومی ترقی کی شرح 1.9 فیصد ہونا خطرے کی گھنٹی ہے،ملک کی موجودہ صورتحال معاشی ایمرجنسی کا تقاضا کررہی ہے،کھانے پینے کی اشیاء کا 78 فیصد مہنگا ہونا ظالم اور چور حکمران کی نشانی ہے،60 سال میں جو قرض لیاگیا، اس سے کئی گنا زیادہ قرض کرپٹ حکمرانوں نے ایک سال میں لے لیا۔انہوں نے کہاکہ 11000 ارب قرض قوم کے لئے اضافی بوجھ ہے، جس کا خمیازہ قوم کو آنے والے برسوں تک ادا کرنے پڑے گا،ہر شعبہ تیزی سے نیچے کی طرف جارہا ہے، صرف حکمرانوں کا سرمایہ اوپر کی طرف جارہا ہے،ہر پاکستانی رو رہا ہے اور حکمرانوں کے لئے ہر دن عید اور ہر رات شب رات ہے،پوری قوم کو کرپٹ اور چور حکمرانوں کو اقتدار سے اٹھا کر باہر پھینکنا ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ کرپٹ اور چور ٹولے سے جس قدر جلد نجات ہوگی، اسی قدر جلد ملک میں معاشی بہتری کے آثار پیدا ہوں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر