کبیروالا‘ ڈاکٹر کی مبینہ غفلت سے خاتون جاں بحق‘ ورثا کا احتجاج

  کبیروالا‘ ڈاکٹر کی مبینہ غفلت سے خاتون جاں بحق‘ ورثا کا احتجاج

  



کبیروالا (تحصیل رپورٹر) عوامی شکایات کے باوجود تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال کبیروالا کے شعبہ ایمرجنسی میں رات کی ڈیوٹی پر تعینات ڈیوٹی ڈاکٹر زاور عملے کا رویہ آنیوالے مریضوں اور شہریوں کے ساتھ توہین آمیز اور ہتک آمیز روئیے میں تبدیلی نہ آسکی،گزشتہ شب 12بجے کے قریب سانس کے مرض میں مبتلا”حفیظاں“ خاتون کو شعبہ ایمرجنسی میں لایا گیا،جہاں تعینات ڈیوٹی ڈاکٹر غضنفر نے چیک اپ کے بعدمریضہ کی تویشناک حالت کے پیش نظر اسے نشتر (بقیہ نمبر40صفحہ12پر)

ہسپتال ملتان ریفر کرنے اور ریسکیو1122کی ایمبولینس کو کال کرنے میں حیلے بہانے بناکر لیت ولعل سے کام لیتا ہے،جس پر مریضہ کے لواحقین نے اپنی مریضہ کی جان بچانے کیلئے نجی ایمبولینس کو کال کی،لیکن مریضہ نجی ایمبولینس کے آنے سے قبل ہی جان بحق ہوگئی۔ڈیوٹی ڈاکٹر کی مجرمانہ غفلت پر لواحقین نے ڈاکٹر کا مریضہ کے علاج میں جان بوجھ کر کوتاہی برتنے کی شکایت کی تو مذکورہ ڈاکٹر نے جان بحق مریضہ کے لواحقین کے ساتھ انتہائی بدتمیزی کے ساتھ ہتک آمیز رویہ اپنا لیا،جس پر لواحقین نے احتجاج کرنے کی کوشش کی تو ڈاکٹر مذکورہ نے پولیس ہیلپ لائن 15پر کال کرکے پولیس تھانہ سٹی کبیروالا کو بلالیا۔جائے وقوعہ پر آنے والے پولیس افسر نے لواحقین،ڈاکٹر اور موقع پر موجود شہریوں سے حالات اور صورت حال معلوم کی تو مبینہ طور پر ڈیوٹی ڈاکٹر کو مجرمانہ غفلت کا ذمہ دارٹھہرایا گیا۔بعدازاں جان بحق مریضہ کو اسکے لواحقین نجی ایمبولینس کے ذریعے اپنے آبائی علاقہ لے گئے۔اس حوالے سے بعض ذرائع نے بتایا ہے کہ مریضہ کے لواحقین کو دباؤ میں لانے کیلئے ان کے خلاف پولیس تھانہ سٹی کبیروالا کو تحریری درخواست دے دی گئی۔

جاں بحق

مزید : ملتان صفحہ آخر