جمشید دستی کی گرفتاری کیخلاف یونیورسٹی طلبہ کا احتجاج

جمشید دستی کی گرفتاری کیخلاف یونیورسٹی طلبہ کا احتجاج

  



مظفرگڑھ(بیورو رپورٹ)تحصیل رپورٹر) بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان میں زیرتعلیم مظفرگڑھ کے درجنوں طلباء اور طالبات نے مظفرگڑھ آئل ٹینکر اغوا ڈکیتی کیس میں گرفتار پاکستان عوامی راج پارٹی کے چیئرمین و سابق ایم این(بقیہ نمبر45صفحہ12پر)

اے جمشید احمدخان دستی کی گرفتاری کیخلاف جھنگ روڈچوک پر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے جمشیداحمد دستی کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ جھنگ روڈ چوک پرمظاہرہ کرنیوالے سٹوڈنٹس نے کتبے اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر جمشید دستی کو رہا کرو کے مطالبات تحریر تھے۔ مظاہرین نے چیف جسٹس آف پاکستان، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ اور اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ جمشید دستی کو انتقامی کارروائی کا نشانہ بنانے کے واقعہ کانوٹس لیکران کی قانونی دادرسی کرتے ہوئے رہا کیا جائے۔مظاہرین نے کہا کہ جمشیددستی کوجھوٹے اوربے بنیاد الزامات کے تحت گرفتارکرکے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے،جمشید دستی مزدوروں اور غریبوں کا ہمدرد ہے اور اس نے ہمیشہ غریبوں کے حقوق کیلئے ہر فورم پر آواز بلند کی ہے جس کی ان کو سزا مل رہی ہے۔ جمشید احمد دستی غریب عوام کا سچا خیرخواہ اور غریب گھرانوں کے سٹوڈنٹس کا محسن ہے اس نے بہا?الدین زکریا یونیورسٹی ملتان میں زیر تعلیم مظفرگڑھ کے غریب گھرانوں کے سٹوڈنٹس کیلئے فری بسیں چلا رکھی ہیں۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ جمشید دستی کیخلاف قائم تمام جھوٹے مقدمات ختم کرکے انہیں فوری طور پر رہا کیا جائے۔

احتجاج

مزید : ملتان صفحہ آخر