ملک میں یوٹیلٹی سٹورز نہ ہونے کے برابرتو عوام کو آٹا،چینی سمیت روزمرہ کی اشیاءکہاں سےسستےداموں ملیں گی: نثار کھوڑو

ملک میں یوٹیلٹی سٹورز نہ ہونے کے برابرتو عوام کو آٹا،چینی سمیت روزمرہ کی ...
ملک میں یوٹیلٹی سٹورز نہ ہونے کے برابرتو عوام کو آٹا،چینی سمیت روزمرہ کی اشیاءکہاں سےسستےداموں ملیں گی: نثار کھوڑو

  



لاڑکانہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کےصدرنثاراحمد کھوڑو وزیراعظم کی جانب سےعام اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کےلیےعارضی طور پر 15 ارب روپے ریلیف پیکج دینےکافیصلہ عوام کےساتھ مذاق اورایڈہاک ازم کی پالیسی قرار دیتےہوئےکہاہےکہ ملک میں یوٹیلٹی سٹورز نہ ہونے کےبرابر ہیں تو عوام کو آٹا، چینی سمیت روزمرہ کےاشیائےکہاں سے سستےداموں ملیں گی؟وفاقی حکومت عوام کو عارضی ریلیف پیکج دینے کےبجائےمستقل پیکج دینے کےلیےروزمرہ اشیائے پر سبسڈی دینے کا اعلان کرے اورٹماٹر،پیاز سمیت دیگر سبزیوں کی سپورٹ پرائس مقرر کی جائیں۔

 نثار احمد کھوڑو کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت آئی ایم ایف کے سامنے جھک گئی ہے،پیٹرولیم مصنوعات، آٹے اور چینی سمیت کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ کرکے اپنی ناکامی چھپانے کے لیے عارضی ریلیف پیکج کا ڈونگ کررہی ہے، عام اشیاء کے لیے عارضی ریلیف پیکج کا فیصلہ کرکے پورے ملک کی طرح غریب عوام کو بھی ایڈہاک ازم پر چلایا جارہا ہے، تبدیلی سرکار عوام کے لیے تباہی سرکار ثابت ہوچکی ہے لیکن وزیر اعظم عمران خان عقل سکھانے کے عادی نہیں رہے ۔انہوں نے کہا کہ ایف بی آر اگر ٹیکس وصول کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے تو اس میں عوام کا کیا قصور ہے جو عوام کی چیخیں نکالی جارہی ہیں، ایف بی آر چیئرمین کا استعفیٰ معاملے کا حل نہیں،ہر محاذ پر ناکام ہونے والے وزیراعظم عمران خان کو خود استعفیٰ دینا چاہیے۔ 

مزید : علاقائی /سندھ /لاڑکانہ