’ریلوے میں کام کا ماحول انتا غلیظ ہے کہ میں نے سرینڈر کرنے کو ترجیح دی ‘محکمہ ریلوے کے اعلیٰ افسر نے استعفیٰ دیدیا 

’ریلوے میں کام کا ماحول انتا غلیظ ہے کہ میں نے سرینڈر کرنے کو ترجیح دی ...
’ریلوے میں کام کا ماحول انتا غلیظ ہے کہ میں نے سرینڈر کرنے کو ترجیح دی ‘محکمہ ریلوے کے اعلیٰ افسر نے استعفیٰ دیدیا 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )محکمہ ریلوے کے 19 ویں گریڈ کے افسر اور وفاقی وزیر ریلوے اعظم سواتی کے سٹاف آفیسر غلام دستگیر نے عہدے سے استعفیٰ دیدیا ہے ۔

نجی ٹی وی جیونیوز کے مطابق غلام دستگیر بلوچ نے اپنا استعفیٰ وزیر ریلوے کو ارسال کر دیاہے جس میں انہوں نے موقف اختیار کیاہے کہ ریلوے میں مافیا کا مقابلہ نہیں کر سکا اس لیے عہدے سے استعفیٰ دے رہاہوں اور عزت کی زندگی گزارنا چاہتاہوں ۔استعفے میں کہا گیا ہے کہ ایک سول سرونٹ اور ٹرانسپورٹ پروفیشنل کے طور پر پاکستان ریلویز کے ڈوبتے ادارے کی ترقی کے لیے ایماندارانہ اور پیشہ وارنہ خدمات انجام دینے کی کوشش کی، عمران خان حکومت کا ریلوے کی تعمیر نو کا فیصلہ فریٹ مافیا کو سوٹ نہیں کرتا۔

استعفے میں مزید کہا گیا ہے کہ ریلوے میں اندرونی اور بیرونی مافیا اتنا طاقتور ہے کہ اس کامقابلہ نہیں کر سکا، ریلوے میں کام کا ماحول بھی اتنا غلیظ ہے کہ میں نے سرنڈر کرنے کو ترجیح دی۔غلام دستگیر بلوچ کا تبادلہ کرکے انہیں رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا تھا۔

مزید :

قومی -