موٹے لوگوں کا مسئلہ ہی حل ہوگیا، وہ دوائی جسے کھا کر بھوک ہی نہ لگے، تازہ تحقیق میں سائنسدانوں نے خوشخبری سنادی

موٹے لوگوں کا مسئلہ ہی حل ہوگیا، وہ دوائی جسے کھا کر بھوک ہی نہ لگے، تازہ ...
موٹے لوگوں کا مسئلہ ہی حل ہوگیا، وہ دوائی جسے کھا کر بھوک ہی نہ لگے، تازہ تحقیق میں سائنسدانوں نے خوشخبری سنادی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) موٹاپے سے نجات اس لیے بھی ناممکن ہے کہ سخت ڈائٹنگ اور کڑی ورزش سے کم کیا گیا وزن خوراک کی معمولی بے احتیاطی سے دوبارہ واپس آ جاتا ہے تاہم اب سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں شوگر کی ایک ایسی دوا کے متعلق بتا دیا ہے جسے کھا کر موٹاپے سے بھی باآسانی نجات حاصل کی جا سکتی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس دوا اوزیمپک (Ozempic)اور رائبلسس(Rybelsus)کے ناموں سے مارکیٹ میں موجود ہے اور دوسری قسم کی ذیابیطس کے علاج میں استعمال ہوتی ہے۔ 

اپنی تحقیق میں سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ یہ دوا ہفتے میں ایک بار کھانے سے بھوک ختم ہو کر رہ جاتی ہے اور آدمی بہت کم کھانا کھانے لگتا ہے جس کے نتیجے میں اس کا وزن تیزی سے کم ہوتا چلا جاتا ہے۔موٹاپے کے خاتمے کے لیے سائنسدانوں نے اس دوا کے تجربات 2ہزار سے زائد لوگوں پر کیے، جن کے نتائج بہت حوصلہ افزاءرہے۔ ان میں سے ایک تہائی لوگوں کے وزن کا پانچواں حصہ جبکہ 75فیصد لوگوں کے وزن کا دسواں حصہ کم ہو گیا۔ سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ یہ دوا موٹاپے کے حوالے سے گیم چینجر ثابت ہو سکتی ہے کیونکہ اس کے ذریعے وہ لوگ بھی اپنا وزن کم کر سکتے ہیں جن کا موٹاپا سرجری کے بغیر ختم نہیں ہو سکتا۔

مزید :

تعلیم و صحت -