سماءنیوز کی خاتون اینکر اپنی چھوٹی سی بچی کو پروگرام کیلئے ساتھ لے آئی اور ایسی بات کہہ دی کہ پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا

سماءنیوز کی خاتون اینکر اپنی چھوٹی سی بچی کو پروگرام کیلئے ساتھ لے آئی اور ...

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )قصور میں ننھی کلی زینب کو درندہ صفت شخص نے مسل دیا جس پر پورا پاکستان غم سے نڈھال ہے ، رپورٹرز بھی موقع پر پہنچے تو ان کی آنکھوں سے آنسو رکنے نہ پائے کوئی ایسی آنکھ نہیں جو اشکبار نہ ہو ایسے میں نجی ٹی وی سماءنیوز کی اینکر کرن ناز بھی آبدیدہ ہو گئیں اور وہ اپنے پروگرام میں اپنی ننھی سی پری کو بھی ساتھ لے کر آئیں جو کہ ان کے ساتھ ڈیسک پر بیٹھی رہی ۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کی اینکر کرن ناز کاکہناتھاکہ آج میں کرن ناز نہیں ہوں بلکہ صرف ایک ماں ہوں ،اس ملک میں بہت بڑے بڑے سانحے ہوتے ہیں ،ایک ہی جھٹکے میں درجنوں لوگوں کا شہید ہوجانا غیر معمولی بات نہیں ہے ،کون مارتاہے اور کیوں مارتاہے اس سوال کا جواب کبھی نہیں ملتا ،کسی نے ٹھیک کہاہے کہ جنازہ جتنا چھوٹا ہوتاہے اتنا ہی بھاری ہو تاہے ،اور ایسا ہی ایک ننھا سا جنازہ قصور کی سڑکوں پر رکھا ہے ،جس کے بوجھ تلے پورا پاکستان دبا ہواہے ،ایک طرف اس کے ماں باپ حرم میں اپنی بچی کی زندگی کیلئے دعائیں کر رہے تھے اور قصور میں وہ شخص اسی زینب کی زندگی کی ڈور کاٹ رہا تھا ،ادھر ماں باپ اپنی بیٹی کیلئے کھلونے خرید رہے تھے تو عین اسی وقت وہ وحشی بچی کی لاش کچرے میں پھینک رہ اتھا ،ادھر وہ ایک ایک لمحہ اس کی یاد میں گزار رہے تھے کہ کب اس سے ملیں گے اور اس کے گال چومیں گے تو ادھر وہ خبیث اس کو ہمیشہ کیلئے ان سے دور کر رہا تھا ،یہ ایک بچی کے ساتھ زیادتی اور قتل نہیں یہ پورے معاشرے کا قتل ہے ،معصوم زینب کا نہیں انسانیت کا جنازہ اٹھا ہے ،افسوس ،مذمت ، کمیٹی ،کمیشن ،انکوائری اور سوموٹو جیسی باتیں پھر ہوں گی لیکن سچ تو یہ ہے کہ زینب کو آپ کے انصاف کی ضرورت نہیں ہے سر ،جوزینب کے ساتھ ہواہے اس کا انصاف اس کا رب قیامت کے روز کرے گا ،جب وہ اپنی چھوٹی سی قبر سے اٹھ کر پوچھے گی کہ مجھے کیوں مارا؟ اس دن پورا پورا نصاف ہو گا ،زینب کا ہاتھ اور ظالموں کا گریباں ہو گا ،حکمران بس اتنا سوچ لیں اس دنے وہ بے بس ہوں گے اور ننھی سی زینب بہت طاقتور ہو گی ۔

ویڈیو دیکھیں:

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...