درندہ صفت عناصر کی معاشرے میں کوئی گنجائش نہیں،علماء کا فتویٰ

درندہ صفت عناصر کی معاشرے میں کوئی گنجائش نہیں،علماء کا فتویٰ

لاہور (ایجوکیشن رپورٹر)تنظیم اتحاد امت پاکستان کے چیئرمین محمد ضیاء الحق نقشبندی کی اپیل پر تنظیم کے 50سے زائد جید مفتیان کرام نے قصور میں معصوم بچی کے ساتھ ہونے والے زیادتی کیس کے خلاف اجتماعی فتویٰ جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے ایسے بدترین گناہ کی اسلام میں کوئی معافی نہیں ہے اس طرح کے گناہ کبیرہ میں مبتلادرندہ صفت افراد کے ناپاک جسم سے سوسائٹی کو جلد از جلد پاک کرناچاہیے تاکہ معاشرے کو ایسی خطرناک قسم کی وباء سے فوراً بچایا جا سکے ۔ مفتیان امت کا کہنا ہے اس کیس میں غفلت اورلاپرواہی برتنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں ۔ متاثرہ بچی کے والدین کو دلاسہ دینا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے ۔حکومت وقت اس کیس میں ذاتی دلچسپی لے اور شفاف تحقیقات کروا کے اصل مجرموں کو بذریعہ عدالت پھانسی کی سزاد لوائے ۔اوران مجرموں کے معاونین یعنی پشت پنائی کرنے والوں کو بھی کڑی سزادی جائے تاکہ آئندہ کوئی ایسی حرکت نہ کرے۔ ان میں مفتی مسعود الرحمن ،مفتی محمد حسیب قادری ، مفتی مشتاق احمد نوری،مفتی پیر سید کرامت علی حسین شاہ ، مفتی ابو بکر اعوان ایڈووکیٹ،علامہ ذوالفقار مصطفی ہاشمی ، ڈاکٹرمفتی محمد عمران نظامی ، علامہ شفاعت رسول قادری، مفتی واجد علی شاہ گیلانی ،مفتی محمد سہیل ،مفتی محمد شاہد مدنی ،ڈاکٹر مفتی سلیمان قادری ، صاحبزادہ مفتی فضل الرحمن اوکاڑوی ، مفتی محمد نعیم ، مفتی محمد افضل ،مفتی محمد عارف سعیدی ، علامہ باغ علی رضوی ، علامہ پروفیسر عبدالعزیز نیازی ، مولانا محمد اعظم نعیمی ، مفتی وارث علی ، علامہ محمد قاسم علوی ،علامہ محمد احمد ، علامہ کوکب نعیمی ، مولانالیاقت علی قادری ،علامہ محمد اصغر علی نورانی ، علامہ غلام مرتضیٰ تبسم ، علامہ محمد ریاض قصوری ، مولانا محمد لیاقت قادری، علامہ محمد منیر شکوری ،مولانا عبدالرحمن جامی ، علامہ محمد مشتاق ،مفتی محمد بشیر قادری ،علامہ محمد صفدر خان ،علامہ احسان اللہ ، علامہ محمد ارشد قادری ،علامہ محمد امین قادری ،علامہ محمد سلیم چشتی ،علامہ محمد بخش چشتی ،علامہ محمد ادریس نیازی ، مولانا محمد شجاعت قادری ،علامہ بدر منیر سیفی اورعلامہ سید حماد شاہ شامل ہیں۔

علماء

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...