سات سالہ بچی کے قاتلوں کو عبرت کا نشان بنایا جائے ، ارکان اسمبلی ، بلدیاتی نمائندے


لاہور(لیڈی رپورٹر) قصور کے دلخراش سانحہ پر حکمران جماعت مسلم لیگ(ن) ‘ تحریک انصاف‘ جماعت اسلامی اور پیپلز پارٹی سمیت سب سیاسی جماعتوں کی خواتین رہنماؤں ڈپٹی مئیرزچیئرمینوں اور این جی اوز کے نمائندوں نے گہرے دکھ اور رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس واقعہ میں ظلم اور بربریت کا شکار ہونے والی زینب کے والدین کے غم میں برابر کے شریک ہیں قصور کے انسانیت سوز واقعہ سے ہمارے دل صدمے سے دو چار ہیں ہم اس ایشو پر کوئی سیاسی بات نہیں کرنا چاہتے سوائے اس بات کہ بلا تفریق اس واقعہ میں ملوث افراد کو عبرت کا نشان بنا دیا جائے تاکہ آئندہ رہتی دنیا تک اس طرح کا واقعہ رونما نہ ہو سکے اس واقعہ کے سہولت کاروں کو بھی سرعام سزا دینا ہو گی۔ مدیحہ رانا‘ عظمی زعیم قادری‘ بشریٰ انجم بٹ‘ صبا صادق‘ شائستہ پرویز ‘ سمیعہ راحیل قاضی‘ ثمینہ خالد گھرکی،ڈپٹی میئرزاعجاز احمد حفیظ‘ فیاض ورک ‘میان طارق ‘ نذیر خان سواتی اور وسیم قادر نرگس خان ‘ سونیا خان ‘ ناصرہ شوکت‘ شہناز کنول‘ بی بی ودیری‘ نبیلہ یاسمین ‘ آسیہ افروز‘ فاطمہ چدھڑ‘ نسیم زہراء‘ روبینہ ملک‘ زاہدہ اظہر‘ کنول لیاقت‘ ڈائریکٹر عورت فاؤنڈیشن ممتاز‘ حسنین شاہ‘ رائے لیاقت‘ شیخ محمد نعیم ‘ ملک شوکت کھوکھر‘ اجمل ہاشمی‘ میاں سلیم ‘ راشد کرامت بٹ‘ اسمیت دیگر کا کہنا تھا کہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لئے عوامی شعور بھی اجاگر کرنا ہو گا ۔انہوں نے کہا کہ اس دردناک واقعہ نے ملک کے ہر چھوٹے بڑے فرد کو انتہائی بری طرح سے متاثر کیا ہے کم سن بچوں کو اپنی ہوس کا نشانہ بنانے والے انسان نہیں بلکہ درندے ہیں اور ایسے لوگ کسی بھی رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔رہنماؤں نے کہا معاشرے کی اصلاح کے لئے ایک اخلاقی تحریک بھی چلانے کی ضرورت ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...