امید ہے پاکستان مذاکرات کی میزپر آئیگا : امریکہ

امید ہے پاکستان مذاکرات کی میزپر آئیگا : امریکہ

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں ) امریکہ نے امید ظاہر کی ہے پاکستان مذاکراتی میز پر آئے گا اور اپنی سرزمین پر دہشتگرد گروپوں کیخلاف جارحانہ کارروائی کریگا ،جبکہ سابق امریکی سفیر رچرڈ اولسن نے ٹرمپ انتظامیہ کو آئینہ دکھاتے ہوئے پاکستان سے سکیورٹی تعاون ر و کنے کے امریکی فعل کو غلط اقدام قرار دیاہے۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی نائب وزیر خارجہ سٹیوگولڈ سٹین نے صحافیوں کیسا تھ بات چیت کرتے ہوئے کہا امریکہ پاکستان کیساتھ تمام دہشتگردوں سے بلاامتیاز نمٹنے کیلئے تعاون کرنے پر تیار ہے اوردوطرفہ سکیورٹی تعلقات کے ازسرنو آغاز و مضبوطی کیلئے اس بات کی امید رکھتے ہیں اسلام آباد مذاکراتی میز پر آئے گا اور اپنی سرزمین دہشتگردوں کیخلاف جارحانہ کارروائی کریگا ، اس حوالے سے امریکہ اپنا موقف پاکستان پر بالکل واضح کرچکا ہے، سکیورٹی امداد بند کرنے کا مطلب پاکستان کیسا تھ بائیکاٹ ہرگز نہیں اور نہ ہی ان فنڈز کے حوالے سے کوئی دوبارہ پروگرام بنایا جارہا ہے ،پاکستانی عوام بھی دہشتگردی سے بری طرح متا ثرہ ہیں جبکہ ملک کی مسلح افواج نے ان دہشتگرد گروپوں کیخلاف موثر کارروائیاں بھی کی ہیں جو اس کے مفادات کو نقصان پہنچا رہے ہیں، اس حقیقت کا ہم اچھی طرح ادراک کرتے ہیں ۔ادھر سابق امریکی سفیر رچرڈ اولسن کا کہنا ہے اسلام آباد کی مدد کے بغیر افغانستان میں ا مر یکی فوج ساحل پر پڑی وہیل کی طرح ہوگی۔پاکستان میں تعینات رہنے والے امریکا کے سابق سفیر نے امریکی اخبار نیویارک ٹائمز میں لکھا ہے کہ پاکستان سے سکیورٹی تعاون روکنا امریکا کی جانب سے جذباتی اقدام ہے، معاونت روکنا درست نہیں۔ امریکا کا اسلام آباد پر زور ختم ہو رہا ہے،رچرڈ اولسن کے مطابق پاکستان کیساتھ غیر رسمی اعلیٰ سطحی رابطے کیے جائیں، ٹویٹ اور پاکستان کی امداد بند کرنے سے امر یکا کامیابی حاصل نہیں کرسکتا، ریگن کے دور میں امریکا حقانی نیٹ ورک کو سپورٹ کرچکا ہے، مسئلے کے حل کیلئے طالبان سے مذاکرات شرو ع کیے جائیں۔

امریکہ

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...