56 کمپنیوں کے سربراہوں کی تنخواہیں، درخواستیں یکجا کرنے کی ہدایت

56 کمپنیوں کے سربراہوں کی تنخواہیں، درخواستیں یکجا کرنے کی ہدایت

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے رجسٹرار آفس کو پنجاب حکومت کی 56سرکاری کمپنیوں کے سربراہان کو تنخواہیں اور مراعات کی بندش کے لئے دائردرخواستیں یکجا کرکے آئندہ تاریخ سماعت پر مشترکہ سماعت کے لئے پیش کرنے کی ہدایت کردی ۔جسٹس شاہد کریم نے یہ ہدایت ایڈووکیٹ رانا علم الدین غازی کی درخواست کی سماعت کے دوران جاری کی ،درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ 56سرکاری کمپنیز کی تشکیل غیر قانونی ہے اور معاملہ ہائیکورٹ میں زیر سماعت ہے،56 کمپنیوں میں 80 ارب روپے سے زائد کی کرپشن ہوئی ہے اور کمپنیز کو تاحال لوٹا جا رہا ہے،اپنے من پسند افراد کو نوازنے کے لئے ایک کمپنی کے سربراہ کو 20 لاکھ روپے سے زائد کی تنخواہ اور مراعات دی جا رہی ہیں، کمپنیز کے سربراہان کوبندر بانٹ کے ذریعے تنخواہیں دینا غیر قانونی ہے،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت کمپنیز کے سربراہان کوغیر قانونی طور پر ادا کی جانے والی تنخواہوں کا اجراء روکنے کا حکم دے،انہوں نے مزید استدعا کی کہ کمپنیز کے سربراہان کو اب تک دی جانے والی تنخواہوں اور مراعات کا حساب لیا جائے،عدالت نے رجسٹرار آفس کو اسی نوعیت کی دیگر درخواستوں کو یکجا کرکے لگانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

56سرکاری کمپنیاں

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...