حج پالیسی 2018 : وفاقی حکومت سے 15 جنوری تک جواب طلب

حج پالیسی 2018 : وفاقی حکومت سے 15 جنوری تک جواب طلب

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے حج پالیسی 2018 پر عملدرآمد رکوانے کے لئے دائر متفرق درخواست پر وفاقی حکومت سے 15 جنوری تک کو جواب طلب کر لیا ہے ۔درخواست میں نشاندہی کی گئی ہے کہ حج پالیسی 2018 ء سپریم کورٹ کی ہدایات کے مطابق نہیں ہے۔جسٹس شاہد کریم نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے سربراہ اظہر صدیق کی جانب سے دائر متفرق درخواست پر سماعت کی جس میں حج پالیسی 2018 ء پر اعتراضات اٹھائے گئے ہیں اور کہا گیا ہے کہ نئی حج پالیسی 2018 ء سپریم کورٹ کے حکم کے منافی ہے ۔ وکیل نے اعتراض اٹھایا کہ نئی حج پالیسی میں پرائیویٹ حج آپریٹرز کا کوٹہ 33فیصد مختص کیا گیا ہے ،اس کے برعکس گزشتہ حج پالیسی میں نجی حج ٹو آپریٹرز کا کوٹہ 40 فیصد رکھا گیا تھا، درخواست گزار نے کہا کہ سپریم کورٹ نئی حج پالیسی میں نئے ٹور آپریٹرز کوکوٹہ دینے کا بھی حکم دیا ،اس عدالتی احکامات پر عمل درآمدکئے بغیر حج پالیسی 2018 جاری کی گئی ہے جو توہین عدالت ہے ۔

حج پالیسی

مزید : صفحہ آخر