ایڈوانس ٹیکس کے خلاف ایل پی جی گیس درآمد بند کرنے کی دھمکی


لاہور (خبر نگار)ایل پی جی درآمدکنندگان نے ریگولیٹری ڈیوٹی اور ایڈوانس ٹیکس کے خلاف یکم فروری سے گیس کی درآمدگی روکنے کی دھمکی دے دی ہے جس کے بعد ایل پی جی کا بحران اور ایل پی جی 300 روپے فی کلو تک پہنچ سکتی ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایل پی جی درآمد اور لوکل پیداواری قیمت میں 15روپے فی کلو کا فرق ہے جس سے ایل پی جی لوکل پیداواری ادارے غریب صارفین سے روزانہ 3کروڑ روپے لوٹنے میں مصروف عمل ہیں۔ایل پی جی کی لوکل پیداوار پر لیوی ٹیکس کے بعد حکومت کی طرف سے درآمدی ایل پی جی پر ریگولیٹری ڈیوٹی لگنے سے قیمتوں میں فرق بڑھ گیا جس سے ایل پی جی کی درآمد پر بہت فرق پڑا ہے۔ ایل پی جی درآمدکنندگان کے نمائندوں کا کہنا ہے کہ اگر امپورٹ بند ہوگئی تو قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگیں گی اور ایل پی جی فی کلو قیمت 300روپے سے تجاوز کر جائے گی اور گھریلو سیلنڈرکی قیمت 4000روپے سے تجاوز کر جائے گی۔اس حوالے سے ایل پی جی ڈسٹری بیوشن ایسوسی ایشن کے چیئرمین عرفان کھوکھر نے کہا کہ درآمد رکنے سے ایل پی جی بحران پیدا ہونے کا خدشہ ہے اور اگر حکومت نے4600روپے ڈیوٹی اور 5.5 فی صد ایڈوانس ٹیکس نہ ختم کیا تو ایل پی جی درآمد رک جانے سے بحرانی کیفیت پیدا ہو جائے گی۔
ایل پی جی

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...