سینیٹ : قائمہ کمیٹی نے نیشنل یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی بل منظور کر لیا


اسلام آبا د( آئی این پی ) بدھ کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سائنس و ٹیکنالوجی کا اجلاس سینیٹر عثمان سیف اللہ کی صدارت میں ہو ا۔ جس میں نیشنل یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی بل 2017 پر غور کیا گیا۔ رکن کمیٹی سینیٹر عبدالقیوم نے کہا کہ یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی کی ضرورت ہے۔ وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی رانا تنویر حسین نے کہا کہ ہم نے اس بل پر دو سال لگائے ہیں ہماری یونیورسٹیز جتنی بھی ہوں کم ہیں۔ باہر کے ممالک میں ایک ہی قسم کی 20،30یونیورسٹیاں ہیں۔ انہوں نے کہ ہمارے ملک میں بہت سارے ادارے ووکیشنل ، اور ڈپلومہ لیول تک ہیں ، جب یہ یونیورسٹی بنے گی تو یہ ادارے اس کے ساتھ افیلیٹ ہوں گے، ان کو ڈگری ملے گی یہ اس کی قسم کی پہلی یونیورسٹی بن رہی ہے ،ہم یہ کام تیزی سے کر نا چاہتے تھے لیکن دو سال لگ گئے۔ سردار فتح محمد حسنی نے کہا کہ بلوچستان سے تعلق رکھنے والے ہمارے وزیر مستعفی ہو گئے ہیں۔ انہوں نے استعفی میں کئی الزامات لگائے ہیں کمیٹی کو چاہیے تھا کہ نوٹس لیتے کہ استعفی میں لکھا کیا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ این ٹی ایس کے معاملات میں بہت گھپلے ہوئے ہیں۔ سینیٹر اعظم خان سواتی نے کہا کہ پی سی آر ڈبلیو آر کے چیئرمین کی مدت ملازمت ختم ہو چکی ہے۔ رانا تنویر حسین نے کہا کہ میرے دور میں جو ہو ا اس کی ذمہ داری لیتا ہوں پہلے یہ وزارت بغیر سربراہ کے بھی چلتی رہی ہے۔ پہلی مرتبہ یہ وزارت فعال ہوئی ہے اور کام کر نا شروع کیا ہے ہم نے اداروں کے سربراہ لگائے ہیں اور میرٹ پر بندے لگائے گئے ہیں۔
بل منظور

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...