ہمارے صوبے میں کوئی بھی اعلٰی معیار کا برن سینٹر نہیں : جسٹس قیصر رشید


پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس قیصررشید نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے اس وقت ہمارے صوبے میں کوئی بھی اعلی معیارکابرن سینٹرنہیں ہے اورلوگ مجبوری کی حالت میں مریضوں کو دوسرے صوبے لے جاتے ہیں مگربعض اوقات ایسے غریب لوگ بھی ہوتے ہیں جن کے پاس اس مریض کو پہنچانے کاکرایہ بھی نہیں ہوتابرن سینٹرکاقیام ایک اہم منصوبہ ہے جس پرہنگامی بنیادوں پر کام کرناچاہئیے ہم کسی بھی صورت اسے سردخانے کی نذرنہیں ہونے دیں گے عوام کو صحت کی سہولیات اگراپنی دہلیزپرمیسرہوجائیں تو اس سے ساری حکومتی اداروں کانام اچھاہوگاعدالت کو ایسے معاملات میں مداخلت کاشوق نہیں مگرجب ادارے کچھ نہ کریں تو پھرعدالت کو مجبورا اس قسم کے اقدامات اٹھاناپڑتے ہیں فاضل جسٹس نے یہ ریمارکس پشاورمیں برن سینٹرکے قیام کے لئے دائرمحمدخورشید خان ایڈوکیٹ کی رٹ کی سماعت کے دوران دئیے دورکنی بنچ جسٹس قیصررشیداورجسٹس غضنفرعلی پرمشتمل تھارٹ کی سماعت کے موقع پر سیکرٹری صحت عابد مجید نے عدالت کو بتایا کہ برن سینٹرکا99فیصد تعمیراتی کام مکمل ہوچکاہے اور17جنوری کو آلات کی خریداری کیلئے منظوری دی جائے گی جس کے ٹینڈرپہلے ہی جاری ہوچکے ہیں غیرملکی ڈونرایجنسی سے فنڈبھی ریلیف ڈیپارٹمنٹ کو موصول ہوچکاہے سی اینڈڈبلیو نے مئی تک کاوقت دیاہے کہ اس میں اے سی کی تنصیب کاکام مکمل ہوگاانہوں نے بتایاگیاکہ علاوہ ازیں ایک تجویزدی گئی ہے کہ ہرڈویژنل ہیڈکوارٹرہسپتال میں20تا30کروڑروپے مالیت کابہترین برن سینٹرقائم کیاجائے گااوراس حوالے سے محکمہ منصوبہ بندی سے بات چیت جاری ہے اوراگروسائل دستیاب ہوئے تو اسی سال اس منصوبے پرکام شروع کردیا جائے گا بصورت دیگر اگلے سال اس پرکام شروع ہوگا۔
پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس قیصررشید خان نے کہا ہے کہ عوامی سہولیات کے مطابق کسی بھی منصوبے میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی اورہم یہ منصوبے فائلوں کی نذرنہیں ہونے دیں گے سرکاری محکمے ایسے اہم منصوبوں کے لئے نکتے نکالنے کی بجائے اسے مکمل کریں فاضل جسٹس نے یہ ریمارکس گذشتہ روز ڈاکٹرممتازکی جانب سے دائرتوہین عدالت کی درخواست کی سماعت کے دوران دئیے دورکنی بنچ جسٹس قیصررشیداورجسٹس غضنفرعلی پرمشتمل تھاواضح رہے کہ ڈاکٹرممتاز نے خیبرٹیچنگ ہسپتال میں نیوروسرجری وارڈ کے قیام کے لئے رٹ دائرکی تھی جو عدالت عالیہ نے منظورکرکے اس کے قیام کاحکم دیاتھاتاہم ان احکامات پر عملدرآمد نہ ہونے پر توہین عدالت کی درخواست دائرکی گئی بدھ کے روز درخواست کی سماعت کے موقع پر سیکرٹری صحت عابد مجید اورہسپتال ڈائریکٹرٗ ایڈیشنل ٗایڈوکیٹ جنرل سکندرشاہ ٗ پیسکو اورسوئی گیس کے نمائندے پیش ہوئے سیکرٹری صحت نے عدالت کو بتایا کہ اس مقصد کے لئے تمام فنڈزجاری کرچکے ہیں۔ اورمحکمہ صحت کی جانب سے کوئی کوتاہی نہیں ہے ہسپتال ڈائریکٹرنے عدالت کو بتایا کہ محکمہ سی اینڈڈبلیواپناکام مکمل کرچکاہے عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے آج جمعرات کے روز تک بجلی اورگیس کے کنکش مکمل کرکے رپورٹ مانگ لی۔

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...