کراچی ، جسٹس گلزار کے بیٹے کی گاڑی پر فائرنگ ، خوش قسمتی سے محفوظ رہے

کراچی ، جسٹس گلزار کے بیٹے کی گاڑی پر فائرنگ ، خوش قسمتی سے محفوظ رہے

کراچی(کرائم رپورٹر)کراچی کے علاقے کورنگی میں سپریم کورٹ کے جج جسٹس گلزار احمد کے بیٹے سعد گلزار کی گاڑی پر فائرنگ ہوئی ہے تاہم خوش قسمتی سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔پولیس کے مطابق کورنگی کے علاقے ویٹا چورنگی کے قریب فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ہے۔ ایس ایس پی کورنگی نعمان صدیقی نے بتایا کہ مشکوک گاڑی میں موجود افراد نے جسٹس گلزار کے صاحبزادے سعد گلزار کی گاڑی پر فائرنگ کی تاہم جسٹس گلزار کے صاحبزادے کے گارڈز کی جوابی فائرنگ سے ملزمان فرار ہوگئے۔ایس ایس پی نعمان صدیقی کے مطابق واقعہ غلط فہمی کے باعث پیش آیا، فائرنگ کے تبادلے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا اور جسٹس گلزار کے صاحبزادے کی گاڑی پر بھی گولی نہیں لگی۔ایس پی کورنگی کے مطابق سعد گلزار اپنے دفتر جارہے تھے کہ ویٹا چورنگی پر انہیں موٹر سائیکل پر سوار چھ ملزمان نے روکنے کی کوشش کی۔روکنے کے دوران ملزمان نے اسلحہ نکالا تاہم اسی وقت سعد گلزار کے ساتھ موجود پولیس اور سیکیورٹی گارڈ نے ملزمان پر فائرنگ کردی، مشتبہ حملہ آوروں کی جانب سے بھی فائرنگ کی گئی تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔عینی شاہدین کے مطابق دو موٹر سائیکلوں پر سوار چھ ملزمان نے فرار ہوتے ہوئے بھی فائرنگ کی، اسی دوران ایک ملزم کنٹینر کی زد میں آ کر زخمی بھی ہوا، تاہم واقعے میں جسٹس گلزار کے بیٹے سعد محفوظ رہے۔ٹوٹی سڑک کے سبب گاڑی ٹریفک میں پھنسی تھی جہاں قریب ہی3مشکوک افرادنظرآنے پر گارڈ نے ہوائی فائرنگ کردی۔نعمان صدیقی نے بتایا کہ سعد گلزار فارماسیوٹیکل کمپنی میں پروجیکٹ منیجرہیں،نامعلوم مسلح افراد موٹرسائیکل پر سوار تھے جنہیں دیکھ کرگارڈ نے فائرنگ کی۔سعد گلزارکاابھی بیان نہیں لیا،بیان کے بعدمزید کارروائی کریں گے۔دوسری جانب ترجمان سندھ پولیس نے بتایا کہ سعد گلزار آفس جارہے تھے کہ تین موٹرسائیکل سوار مسلح افراد ویٹا چورنگی پر موجود تھے، جسٹس گلزار کے صاحبزادے کے گارڈز نے مسلح افراد کو دیکھتے ہی فائرنگ کردی جس سے مسلح افراد فرار ہوگئے، جن کی تلاش جاری ہے۔سعد گلزار کورنگی میں فارما کمپنی میں ملازمت کرتے ہیں۔وزیرداخلہ سندھ سہیل انور سیال نے جسٹس گلزار کے بیٹے کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی ایسٹ سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول